New Age Islam
Thu Oct 01 2020, 01:29 PM

Urdu Section ( 8 May 2020, NewAgeIslam.Com)

Sufi love: Ishq-majazi to Ishq-haqiqi صوفی محبت : عشق مجازی سے عشق حقیقی تک


ہندوستان ٹائمس  کی پیشکش 

(اردو میں ترجمہ: نیو   ایج  اسلام)

تصوف صوفی شاعری کا ایک اہم مقام ہے۔ ویدانت کی طرح صوفیوں کا ماننا ہے کہ خدا ہر انسان میں موجود ہے لیکن وہ ہم سے خودی (انا) کے ذریعہ پوشیدہ ہے ، جسے ہندو صحیفہ میں احم کہتے ہیں۔

لہذا  ایک انسان کے لیے ضروری ہے کہ وہ خدا کے ساتھ ہونے سے قبل خودی کو مار ڈالے ۔ صوفیاء نے اس مقصد کے لئے جو راستہ چنا ہے وہ عشق مجازی سے عشق حقیقی ہے۔

عشق مجازی میں محبت کرنے والوں میں خوشی ، درد ، اذیت اور خوشی کے عام زمینی احساسات ہیں۔ عشق حقیقی میں محب انسان ہوتا ہے اور محبوب خدا ہوتا ہے۔

لیکن وہ دنیا کی آسائش و آرام کی طلب نہیں کرتے۔ وہ جنت کی آرزو نہیں رکھتے اور نہ ہی وہ جہنم سے ڈرتے ہین۔ وہ صرف خدا کی تجلیات کے دیدار کے طالب ہوتے ہیں۔

اس جذبات کا اظہار مشہور صوفی شاعرہ رابعہ بصری نے اپنے معروف مناجات میں خوبصورتی کے ساتھ کیا ہے:

‘‘اے میرے معبود و مسجود! اگر میں تری عبادت جہنم کے خوف سے کرتی ہوں تو مجھے نارِ جہنم کا لقمہ بنادے ۔ اگر میں تری عبادت جنت کی لالچ سے کرتی ہوں تو مجھے ہمیشہ کے لیے اس سے محروم کردے۔

‘‘اگر میں صرف تجھ سے تری ذات سے ترے لیے محبت کرتی ہوں تو اے میرے مولیٰ مجھے اپنے ’’جمالِ ازلی‘‘ سے محروم نہ کیجیو!’’

عشق مجازی کے وصف میں پنجابی صوفی شعراء نے طاقتور قبیلہ سیال کی بیٹی ہیر اور  تخت ہزارا کے چشم وچراغ رانجھا کی محبت کا رچنا  کا استعمال کیا ہے۔

عشق حقیقی میں ہیر انسان اور رانجھا خدا کی علامت ہے۔ سلطان باہو کہتے ہیں کہ عشق مجازی پھول ہے اور عشق حقیقی اس کا پھل ہے۔

بلے شاہ اس طرح ہیر ​​اور رانجھا کی استعاراتی اتحاد کی وضاحت کرتے ہیں: "کل میں رانجھا سے الگ تھا / آج میں اپنے رب کے ساتھ ہو گیا  ہوں / اصحاب، مجھے ہیر نہیں کہتے ہیں / مجھے رانجھا کہتے ہیں۔"

صوفیا اکثر وجد میں لمبی اسکرٹ  اور بیلناکار ٹوپی پہنے ہوئے جیساکہ  فلم جودھا اکبر میں دکھایا گیا ہے  ڈانس کرتے ہوئے گاتے ہیں: "اے معالج / آؤ اور میری نبض محسوس کرو / میں مر رہا ہوں / میرے رب نے مجھے رقص میں تھکا دیا ہے ۔

" شاہ حسین نے یہاں تک گایا: "میں ورینداون سے تعلق رکھنے والا ایک گوپی ہوں / سیاہ رنگت والا کرشنا میرا معاون دوست ہے۔

"ایک موقع پر وہ کہتے ہیں:" اٹھو ، اے  سست انسان / رام کی تعریف کا وقت آ گیا ہے  "

(مصدر ، ہندوستان ٹائمس ، نئی دہلی)

URL for English article: https://www.newageislam.com/islamic-ideology/sufi-love--ishq-majazi-to-ishq-haqiqi-/d/114

URL: https://newageislam.com/urdu-section/a-hindustan-times-feature/sufi-love--ishq-majazi-to-ishq-haqiqi--صوفی-محبت---عشق-مجازی-سے-عشق-حقیقی-تک/d/121798

New Age IslamIslam OnlineIslamic WebsiteAfrican Muslim NewsArab World NewsSouth Asia NewsIndian Muslim NewsWorld Muslim NewsWomen in IslamIslamic FeminismArab WomenWomen In ArabIslamophobia in AmericaMuslim Women in WestIslam Women and Feminism


Loading..

Loading..