New Age Islam
Tue Sep 22 2020, 09:22 PM

Urdu Section ( 17 Nov 2013, NewAgeIslam.Com)

Ibn-e-Taimiyah is the Glory of Bihar ‘ سر زمین بہار کی شان ہے تیمیہ’

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

جے این یو میں فارغین جامعہ امام ابن تیمیہ کی نمائندگی کے بینر تلے اجلاس منعقد

نئی دہلی ، 17 نومبر ( محمد خالد) سرزمین بہار میں ڈاکٹر محمد لقمان کے ہاتھوں  بنائے ، سجائے اور سنوارے گئے باغ و ادب ‘ جامعہ امام ابن تیمیہ ’ کے فارغین تعلیم کے تقریباً ہر میدان  میں اپنی صلاحیت کا مظاہرہ کرنے میں کسی بھی ادارے  سے پیچھے نہیں بلکہ کچھ میدانوں  میں وہ صف اول  میں نظر آتے ہیں ۔ وہ فراغت کے بعد دیگر  دینی اداروں  کے ساتھ ساتھ  یونیورسیٹیوں  میں بھی اپنی  صلاحیت کالوہا منوا چکے ہیں اور ہر جگہ  پروگرام منعقد کرتے رہتے ہیں ۔ اسی  سلسلہ  کو آگے بڑھاتے ہوئے جواہر لال یونیورسیٹی  میں آج فارغین  تیمہ  کے نمائندگان کے بینر  تلے ایک پروگرام کا انعقاد عمل میں آیا، کاویری ہاسٹل کے روم نمبر 145 میں پی ایچ ،ڈی اسکالر محمد اسعد تیمی کے زیر  صدارت اس پروگرام کا آغاز ہوا، پر وگرام کاموضوع تیمی  برادران کے تعلیمی سرگرمیو ں  کا جائزہ اور جامعہ  ابن تیمہ  میں زیر تعلیم طلبا کیلئے  جے این یو کا راستہ  ہموار  کرانے کی طریق کار تھا، پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے ریسرچ اسکالر ثناء اللہ صادق تیمی نے کہا کہ جے این یو میں تیمی برادران  کی کثرت ان تمام لوگوں کے چہرے  پر زنا  ٹے دار طماچہ ہے جن لوگوں  کو یہ کہنا  ہے  جامعہ  امام ابن تیمہ  کا تعلیمی معیار  زوال کا شکار ہو چکا ہے۔

 موصوف نے اس بات پر خاص طور پر زور دیا کہ جامعہ امام ابن تیمیہ کے بچوں کو جے این یو  کیسے لایا جاسکتا ہے اور کون سا طریقہ بہتر ہوسکتا ہے ، موصوف نے صلاح کے طور پر ان باتوں کی طرف کااشارہ کیا کہ ہمیں باضابطہ طور پر جامعہ میں  ایک وفد کی شکل میں  جانی چاہیے اور وہاں طلباء میں جے این یو کے حوالے سے رغبت پیدا کرنے کی کوشش کرنی چاہیے ، ساتھ ہی ساتھ ہمیں اپنے تجرباب کی بنیاد پر چند نمونہ ذات سوال بنا کر ان تک پہنچانی چاہیے اور ذاتی طور پر بھی ہمیں ان کی بھرپور معاونت کرنی چاہیے ، مولانا جاوید  اسرار تیمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمیں انگلش کی تعلیم شروع سے ہی دی جاتی ہے لیکن اس کے باوجود  ہم پوری طرح انگلش بولنے  سے قاصر  ہوتے ہیں  او ر کھل کر ہم کسی سے انگریزی میں بات نہیں کر پاتے، موصوف نے اس کا حل نکالتے ہوئے کہا کہ ہمیں باہمی گفت و شنید کو اردو اور مادری زبان میں نہ کر کے انگلش ہی میں کرنی چاہیے جےآر ایف ہولڈر مولانا حفظ الرحمٰن تیمی نے جے آر  ایف کے  حوالے سے اپنے خطاب  میں کہا کہ یہ ٹسٹ بہت ہی آسان ہے ہم اگر اپنی محنت کےساتھ ساتھ تھوڑی سی دانشمندی کاسہار لیں تو یہ با آسانی نکالا جا سکتا ہے ، تیاری کیلئے ہمیں سب سے اچھی پرتیوگیتا درپن کے ایڈیٹوریل بورڈ سے چھپی ہوئی کتاب لگی، اس کے علاوہ ٹیسٹ میں چند کمپیوٹر سے متعلق سوالات ہوتے ہیں جس کو دیکھ کر ہم گھبرا جاتے ہیں جب کہ ہم ذرا دھیان دیں تو وہ بھی با آسانی حل ہوسکتا ہے ۔

 پروگرام کی صدارت فرمارہے پی ایچ ڈی اسکالر  اسعد تیمی  نے اپنے خطاب میں کہا کہ سب سے پہلے ہمیں اپنےہدف کا تعین کرنا چاہیے ، اور پھر اس  میدان میں ایمانداری  بھر محنت  کرنی چاہیے ، ساتھ ہی ساتھ آج کے اس مسابقاتی دور میں جتنے مقابلے ہورہے ہیں ہمیں اس میں بھر پور شراکت کرنی چاہیے  اور جہاں تک ہوسکے جے این یو نے جو کچھ سہولیات آپ کو دی ہیں ہمیں ان کےساتھ انصاف کرنے کی کوشش  کرنی چاہیے ۔ واضح رہے کہ آج کے اس جلسے  میں مو لاناہارون رشید تیمی، مولانا تبریز عالم تیمی، مولانا مہر عالم تیمی، مولانا محبوب عالم تیمی، مولانا جمیل اختر شفیق تیمی ، مولانا ہارون سجاد تیمی، مولانا فردوس عالم تیمی ، مولانامحفوظ عالم تیمی، مولانااحسان بدر تیمی ، مولاناسیف الرحمٰن تیمی اور رحمت اللہ تیمی بھی شریک محفل رہے اور سبھوں نےبھائی حفظ الرحمٰن کو جے آر ایف  نکالنے پر مبارکباد پیش کیں ۔

8 نومبر، 2013  بشکریہ : روز نامہ صحافت ، نئی دہلی

URL:

http://www.newageislam.com/urdu-section/muhammad-khalid--محمد-خالد/ibn-e-taimiyah-is-the-glory-of-bihar--‘-سر-زمین-بہار-کی-شان-ہے-تیمیہ’/d/34448

 

Loading..

Loading..