New Age Islam
Mon Sep 27 2021, 09:41 PM

Urdu Section ( 8 Jul 2013, NewAgeIslam.Com)

Comment | Comment

Polygamy in the Islamic Culture اسلامی ثقافت میں تعدد ازدواج

 

مشیل ایچ جینکنس  

17 جنوری 2013

( انگریزی سے ترجمہ۔ نیو ایج  اسلام)

تعدد ازدواج بہت سے مذاہب اور ثقافتوں میں عام ہے۔ اسلام میں  اس پر عمل در آمد ، اہل ایمان کے درمیان قرآن کی مختلف تشریحات کے ساتھ بحث و مباحثے  کا موضوع ہے ۔ تعدد ازدواج کے تئیں  مسلمانوں کے  روئیے ہر وقت اور ہر مقام  پر  اسلامی عقیدے کی تنوع کی عکاسی کرتے ہیں ۔

تعدد ازدواج

تعدد ازدواج بہت سی عورتوں کے ساتھ شادی کرنا  ہے، جبکہ درست اصطلاح polygyny ہے - ایک سے زیادہ عورتوں  کے ساتھ شادی کرنا ۔ مسلم مردوں کو ایک سے زیادہ بیوی رکھنے کی اجازت ہے جبکہ مسلم خواتین کو صرف ایک ہی شوہر کی اجازت ہے ۔ اگر چہ  قرآن مجید میں اس عمل پر گفتگو کی گئی ہے  لیکن تعدد ازدوج  کے متعلق  روئیے  اور قوانین پوری  مسلم دنیا میں وسیع پیمانے پر مختلف ہیں۔ یہ بعض مسلم معاشروں میں عام ہے، جبکہ دوسرے معاشرے میں  ممنوع یا غیر قانونی ہے ۔

قرآن

قرآن کی سورہ 4 اور  آیت 3 میں تعدد ازدوج کا ذکر ہے  جس میں اس کردار کا ذکر کرتے ہوئے جو شادی ان کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے میں ادا کرتی ہے  جس میں  یتیموں کے ساتھ  پیش آنے کی  وضاحت کی گئی ہے :۔ ‘‘اور اگر اس بات کا اندیشہ ہو کہ (سب عورتوں سے) یکساں سلوک نہ کرسکو گے تو ایک عورت (کافی ہے) یا لونڈی جس کے تم مالک ہو۔ اس سے تم بےانصافی سے بچ جاؤ گے’’یہ آیت  تعدد  ازدواج  کے بنیادی  قوانین پر مشتمل ہے: ایک شخص چار بیویوں سے شادی کر سکتا ہے بشرطیکہ  وہ ان  تمام کے ساتھ  انصاف کا معاملہ کر سکے ۔ اور اگر وہ  ان  چاروں کے ساتھ انصاف   کرنے کے قابل نہیں ہے، تو وہ صرف ایک  سے شادی  کرے گا جس سے وہ انصاف کر سکے ۔ سورت 4 اورآیت 129 سے اس بات کی تائید ہوتی ہے کہ مختلف بیویوں کے درمیان مکمل  انصاف ناممکن نہیں تو مشکل ضرور ہے اور یہ آیت شوہروں کو  جانب داری سے بچنے کا حکم دیتی ہے ۔

ثقافتی بنیادیں

ایک مؤرخ اور قرآن کے عالم سید مودودی یہ کہتے ہیں کہ تعد د ازدواج کے تئیں اسلامی رویوےایک مخصوص ثقافتی اور تاریخی سیاق و سباق سے وجود میں آئے  اور اس کی تشکیل اس زمانے کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے کی گئی تھی۔ قبل از اسلام عرب دنیا میں مرد جتنی عورتوں سے چاہیں  شادی کر سکتے تھے – ممکنہ طور پر  اس کی حد بندی صرف رہنے کی گنجائش  اور بجٹ کے ذریعہ تھی۔ ملوث خواتین کے حقوق کے تحفظ کے ایک طریقہ کے طور پر، قرآن مجید نے عدل کو یقینی بنانے کے لئے بیویوں کی تعداد کو محدود کر دیا ۔ تعدد ازدوج کے  قرآنی تصور کو اس زمانے کے بہت سے سخت حقائق کا سامنا کرنا پڑا ۔ عرب دنیا میں مسلسل جنگ کی صورت حال نے ایک بڑی تعداد میں  مردوں اور عورتوں میں ایک عدم توازن پیدا کر دیا  تھا اوریہاں تک کہ  بڑی تعداد میں یتیموں کو بھی جنم دیا  ۔ تعدد ازادواج نے اس بات کو   یقینی بنایا کہ ہر عورت سے اسلامی قانون کے تحت شادی کی جا سکتی ہے اور یہ کہ یتیموں کی دیکھ بھال اور ان کی ضروریات کو پورا کیا جا سکتا ہے  ۔

جدید تشریحات

ایک عالمی مذہب کے طور پر، اسلامی قانون مختلف تشریحات کے ساتھ مشروط ہے۔ بعض اسلامی ممالک میں تعدد ازدوج  نسبتا عام ہے جبکہ ترکی، تیونس، اور بوسنیا اور ہرزیگوینا سمیت دوسروںممالک میں  یہ عمل  مکمل طور پر غیر قانونی ہے ۔ یہاں تک کہ ا نڈونیشیا جیسے بڑے مسلم ملک میں جو اس کی  اجازت دیتا ہے  یہ عمل  تیزی سے غیر مقبول ہو رہا ہے ۔ اسلامی کمیونٹیز کے ساتھ نمٹنے میں غیر مسلموں کو انفرادی مسلمانوں کو ان کے خاندانوں اور کمیونٹیز  کو ان کی ترجمانی کا موقع دیتے ہوئے مفروضات قائم کرنے  کے خلاف احتیاط برتنا  چاہئے ۔

تعدد ازدواج کے  رجحان کو ہمیشہ ناقدین کا سامنا ہوا ہے۔ تاریخی طور پر، وہ اکثر منصفانہ  سلوک کی ضرورت کا حوالہ پیش کرتے ہیں یہ حجت پیش کرتے ہوئے کہ ایک شوہر ہمیشہ ایک بیوی پر دوسرے کی جانب داری  کا مظاہرہ کرے گا ۔ عصر حاضر میں  بہت سے ممالک نے ایک بار پھر ناانصافی اور قرآن مجید کے مطابق  ایک بیوی کے حقوق کی خلاف ورزی کے امکانات کے حوالے دیتے ہوئے  اس عمل پر  قانونی طور پر پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔ مزید برآں، صدیوں سے حقوق نسواں کی علمبردار مختلف اسلامی تحریکیں خواتین کے ساتھ رویے میں تبدیلی کے لئے حجت کر رہی ہیں۔ تعدد ازدواج  میں ایک عورت کے حقوق کی خلاف ورزی کے امکانات  اکثر ان کے مسائل میں سے ایک ر ہے ہیں۔

حوالہ جات

قرآن کریم

قران کا معنی؛ سید عبد للہ مودودی

Islam, A Short History ، کیرن آرمسٹرانگ

ماخذ:

http://people.opposingviews.com/polygamy-islamic-culture-2786.html

URL for English article:

 https://www.newageislam.com/islamic-culture/michael-h-jenkins/polygamy-in-the-islamic-culture/d/10058

URL for this article:

https://www.newageislam.com/urdu-section/michael-h-jenkins,-tr-new-age-islam/polygamy-in-the-islamic-culture--اسلامی-ثقافت-میں-تعدد--ازدواج/d/12506

 

Loading..

Loading..