certifired_img

Books and Documents

Urdu Section (13 Jan 2014 NewAgeIslam.Com)



History of Namaz in Islam: The Arch, Reciting Surah e Fatiha and Speaking during Namaz (15) (اسلام میں نماز کی تاریخ - محراب، نماز میں فاتحہ پڑھنا اور بولنا (15

 

ناستک درانی، نیو ایج اسلام

13جنوری، 2014

محراب

مساجد میں محرابیں ہوتی ہیں جو قبلہ کے رخ کی طرف دلالت کرتی ہیں، امام جب نمازیوں کی امامت کرتا ہے تو وہ اسی کے سامنے کھڑا ہوتا ہے، ان ساری محرابوں کا رخ مکہ کی طرف ہوتا ہے، قرآن مجید میں لفظ ”محراب“ وارد ہوا ہے: فَنَادَتْهُ الْمَلَائِكَةُ وَهُوَ قَائِمٌ يُصَلِّي فِي الْمِحْرَابِ (ترجمہ: تو فرشتوں نے اسے آواز دی اور وہ اپنی نماز کی جگہ کھڑا نماز پڑھ رہا تھا) 1، یعنی عبادت کی جگہ اور مسجد کا درمیان 2، جاہلیوں کی لغت میں یہ لفظ اسی معنی میں وارد ہوا ہے۔

لفظ محراب مطلق طور پر مکہ کی طرف سمت کے معنی میں استعمال نہیں ہوتا بلکہ یہ اس خاص نشان زد جگہ کے لیے مخصوص ہے جو مسجد کی دیواروں میں اسے ممتاز بناتی ہے اور کعبہ کے رخ کا پتہ دیتی ہے، بعد میں محرابیں بنانے میں بخوبی فن کا مظاہرہ کیا گیا، البتہ لفظ قبلہ محراب اور نماز کے رخ کا معنی دیتا ہے 3۔

بعض مستشرقین کا کہنا ہے کہ لفظ کا اصل غیر معروف ہے، تاہم بعض دیگر مستشرقین وعلمائے لغت کا خیال ہے کہ اس لفظ کی اصل ”حربہ“ یا ”حریب“ ہے، یا اس کا اصل جنوبی عربی لفظ ”مکراب“ ہے جس سے حبشی زبان میں لفظ ”مکوراب“ (Mekwrab) بنتا ہے جس کا مطلب ہے ”عبادت گاہ“ تاہم اب ان آراء کی تصدیق نہیں ہوسکتی 4۔

نماز میں فاتحہ پڑھنا

نماز میں سورہ فاتحہ پڑھنا زیادہ تر اقوال میں نماز کے ارکان میں سے ایک رکن ہے، حضرت عبادۃ بن الصامت رضی اللہ عنہ سے مروی ہے: ”اس کی نماز نہیں جس نے اس میں کتاب کی فاتحہ نہیں پڑھی“، اور حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے: ”جس نے ایسی نماز پڑھی جس میں کتاب کی فاتحہ نہ پڑھی گئی ہو وہ ناقص ہے“، اور چونکہ فاتحہ نماز کے ارکان میں سے ایک رکن ہے لہذا ذہن اس طرف جاتا ہے کہ اس کا نزول نماز کے حکم کے ساتھ ایک ہی دن میں ہوا ہوگا۔

تاہم سورہ فاتحہ وحی کے نزول کے ایک عرصہ بعد نازل ہوئی، یہ مکی سورت ہے، یہ بھی کہا گیا ہے کہ یہ مدنی سورت ہے اور یہ بھی کہ یہ مکی مدنی سورت ہے، مروی ہے کہ جب قبلہ تبدیل ہوا تو جبریل علیہ السلام نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو بتایا کہ سورہ فاتحہ نماز کی رکن ہے، ہم جانتے ہیں کہ زیادہ تر آراء میں قبلہ کی تبدیلی سنہ دو ہجری کو مدینہ میں ہوئی، لہذا اسے نماز کا رکن بنانے کا حکم اسی دور میں دیا گیا ہوگا لہذا ایسی باتوں کی کوئی اہمیت نہیں کہ: ”ایسا نہیں دیکھا گیا کہ کبھی اسلام میں نماز بغیر فاتحہ کے پڑھی گئی ہو“ 5۔

نماز میں بولنا

نماز کے دوران بولنا جائز نہیں کیونکہ نمازی اللہ تعالی کے حضور اس کی عبادت اور اس کا قرب حاصل کر رہا ہوتا ہے، لہذا کسی سے بات کرنا یا کسی کی بات کا جواب دینا جائز نہیں، اگر انسان کسی عظیم شخص کی مجلس میں کسی سے نہیں بولتا تو عظیم خالق کی عبادت کے دوران کسی سے بات کرنا جیسے جائز ہوسکتا ہے، اسلام نے اس کا اقرار کیا ہے اور نماز کے حکم کے نزول کے کچھ عرصہ بعد اسے مسلمانوں پر فرض کردیا ہے، تاہم علماء کا اس پر اختلاف ہے کہ یہ حکم ہجرت سے پہلے تھا یا ہجرت کے بعد۔

نماز میں بولنے کو حرام قرار دیے جانے سے قبل نمازی سلام کرنے والے کو سلام کا جواب دیتے تھے، اور جو بھی ان سے بات کرتا اس سے بات کرتے اور اپنی ضروریات پوری کرتے رہتے، انہیں اس میں کوئی حرج نظر نہیں آتا تھا تا آنکہ نماز کے دوران گفتگو کو حرام قرار دے دیا گیا۔

حضرت زید بن ارقم رضی اللہ عنہ سے مروی ہے، فرمایا: ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے زمانہ میں نماز میں بولتے تھے، ہم میں سے کوئی اپنے ساتھی سے بضرورت بات کرتا حتی کہ یہ آیت نازل ہوئی: حَافِظُوا عَلَى الصَّلَوَاتِ وَالصَّلَاةِ الْوُسْطَىٰ وَقُومُوا لِلَّهِ قَانِتِينَ (ترجمہ: سب نمازوں کی حفاظت کیا کرو اور (خاص کر) درمیانی نماز کی اور الله کے لیے ادب سے کھڑے رہا کرو) تو ہمیں خاموشی کا حکم دے دیا گیا، ”قوموا لله قانتين“ عکرمہ سے مروی ہے فرمایا: وہ نماز میں گفتگو کیا کرتے تھے، نماز کے دوران کسی شخص کا خادم آتا اور اپنی ضرورت کے لیے اس سے بات کرتا تو انہیں بولنے سے منع کردیا گیا 6۔

نماز کے دوران سلام کرنے والے کو سلام کا جواب دیا جاتا تھا، حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے مروی ہے فرمایا: ”حبشہ ہجرت سے قبل ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو نماز کے دوران سلام کرتے تو وہ ہمیں جواب دیا کرتے تھے، تو جب ہم واپس آئے تو میں نے آپ کو سلام کیا تو آپ نے مجھے جواب نہیں دیا، تو جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے سلام پھیرا تو فرمایا: میں نے تمہیں اس لیے جواب نہیں دیا کیونکہ میں نماز میں تھا اللہ تعالیٰ جو نیا حکم چاہتا ہے دیتا ہے اور اس نے نیا حکم یہ دیا ہے کہ تم نماز میں باتیں نہ کرو 7۔

علماء میں اس بات پر اختلاف ہے کہ نماز میں گفتگو کب حرام ہوئی، بعض کا خیال ہے یہ حکم مدینہ میں دیا گیا کیونکہ جس آیت میں یہ حکم دیا گیا ہے وہ مدنی آیت ہے، لہذا یہ حکم ہجرت کے بعد دیا گیا، جبکہ بعض دیگر کا خیال ہے یہ حکم مکہ میں دیا گیا کیونکہ حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے مروی ایک حدیث میں آیا ہے کہ مکہ میں نماز میں گفتگو اور سلام کچھ عرصہ تک جائز تھا، تاہم جب وہ حبشہ سے اپنی ہجرت سے واپس آئے اور مکہ میں مدینہ ہجرت سے قبل رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی زیارت کی تو انہوں نے پایا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نماز میں گفتگو اور سلام کا جواب دینے سے منع فرما رہے تھے، لہذا نماز میں گفتگو کو حرام قرار دینے کا حکم مکہ میں ہجرت سے کچھ عرصہ قبل نازل ہوا تاہم علماء نے درست طور پر اس عرصہ کا تعین نہیں کیا ہے 8۔

حوالہ جات:

1- آل عمران آیت 39۔

2- المفردات، الاصفہانی 110۔

3- المفردات، الاصفہانی 400۔

4- المفردات، الاصفہانی 110، Shorter, P., 343۔

5- دیکھیے اسباب النزول 11 اور اس سے آگے۔

6- تفسیر الطبری 354/2، تفسیر ابن کثیر 294/1۔

7- تفسیر ابن کثیر 294/1، تفسیر الطبری 354/2۔

8- تفسیر ابن کثیر 294/1، تفسیر الطبری 354/2۔

URL for Part 1:

http://www.newageislam.com/urdu-section/history-of-namaz-in-islam--part-1-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---نماز-(1/d/14330

 

URL for Part 2:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam-ناستک-درانی/history-of-namaz-in-islam--part-2-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---نماز-(2/d/34490

 

URL for Part 3:

http://www.newageislam.com/urdu-section/history-of-namaz-in-islam-part-3--(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ-–-نماز-کی-شکل-اور-با-جماعت-نماز-(3/d/34528

 

URL for Part 4:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam--ناستک-درانی/history-of-namaz-in-islam--part-4--(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---نماز-کے-اوقات-اور-ان-کی-تعداد-(4/d/34567

 

URL for Part 5:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namaz-in-islam--part-5-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---اسلام-میں-نماز-(5/d/34616

 

URL for Part 6:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam-ناستک-درانی/history-of-namaz-in-islam--part-6-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---اسلام-میں-نماز--(6/d/34778

 

URL for Part 7:

http://newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namaz-in-islam-part-7--performing-tahajjud-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---رات-كا-قيام-(7/d/34836

URL for Part 8:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namza-in-islam-(part-8)--namaz-of-two-reka-ats-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---دو-رکعت-کی-نماز-(8/d/34896

 

URL for Part 9:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam--ناستک-درانی/history-of-namza-in-islam-(part-9)--first-ever-offered-namaz--(اسلام-مں--نماز-کی-تاریخ---پہلی-نماز۔-حصہ-(9/d/34960

 

URL for Part 10:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namza-in-islam-(part-10)--namaz-of-a-traveller-and-that-of--a-settled-person-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---مقیم-اور-مسافر-کی-نماز-(10/d/35015

 

 URL for Part 11:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namza-in-islam-(part-11)--azaan-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ-–-اذان-(11/d/35032

 

 URL for Part 12:

http://www.newageislam.com/urdu-section/history-of-namaz-in-islam-(part-12)--minaret-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---مینار-(12/d/35071

 

URL for Part 13:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namaz-in-islam-(part-13)---purification,-ablution-and-tayammum-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---طہارت-وضوء-اور-تیمم-(13/d/35144

 

: URL for Part 14:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-islam--qiblah-(part-14)-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---قبلہ-(14/d/35182

 

URL for this article:

http://www.newageislam.com/urdu-section/nastik-durrani,-new-age-islam/history-of-namaz-in-islam--the-arch,-reciting-surah-e-fatiha-and-speaking-during-namaz-(15)-(اسلام-میں-نماز-کی-تاریخ---محراب،-نماز-میں-فاتحہ-پڑھنا-اور-بولنا-(15/d/35248

 




TOTAL COMMENTS:-    


Compose Your Comments here:
Name
Email (Not to be published)
Comments
Fill the text
 
Disclaimer: The opinions expressed in the articles and comments are the opinions of the authors and do not necessarily reflect that of NewAgeIslam.com.

Content