FOLLOW US:

Books and Documents
Urdu Section
اپنے کعبے کی حفاظت تمہیں خود کرنی ہے
مولانا عبیداللہ خان اعظمی

اپنے کعبے کی حفاظت تمہیں خود کرنی ہے
Maulana Obaidullah Khan Azmi
افسوس تو اس کاہے کہ صدام حسین کو جب اس بات کا احساس ہوا کہ امریکہ یہودیت کے کالے ناگ پر سوار ہوکر پورے عالم عربی واسلامی کو ڈس لینا چاہتا ہے تو ان کو خود ان کی قوم کے ذریعہ ہی موت کے گھاٹ اتارنے کا بندوبست کرادیا  جاتا ہے۔ ایران میں یہ جذبہ انفرادی و اجتماعی دونوں ہی سطح پر سرگرم وفعال نظر آتا ہے۔علامہ خمینی صاحب نے لاشرقیہ ،لاغربیہ اسلامیہ کا نعرہ دیتے ہوئے پورے عرب ممالک کو دعوت دی تھی کہ اگر ہم متحدہ ہوکر ایک ایک لوٹا پانی بھی اسرائیل پر ڈال دیں تو یہ آتشِ نمرود نہ صرف یہ کہ اولاد ابراہیم کے لئے سرد ہو جائے بلکہ دنیا کے نقشے سے ہی یہ ملک محو ہوجائے گا۔لیکن افسوس کہ یہاں بھی سادہ لوح مسلمان یہودی ونصرانی بساط پر ایک مہر کی طرح استعمال ہوگیا اور خود اپنے ہی مصالح ومفاد کے خلاف امریکی ریموٹ سے چلنے والا ایک کھلونا بنارہا ۔ آج جب یہ حقیقت دنیا کے سامنے آئی ہے کہ امریکی فوجیوں کو باضابطہ یہ پڑھا یا جارہا ہے کہ ان کا عمومی دشمن اسلام ہے نہ کہ دہشت گرد تو اس  وقت بھی شاہان عرب امریکی ضیافت میں تمام جہاں کی نعمتیں دسترخوان پر چن کر امریکہ کے روبروباادب کھڑے ہوئے ہیں۔

 

نصاب تعلیم اور نظام تعلیم کی اہمیت اور مسلم معاشرہ

ایک طرف دین ودنیا کا یہ مصنوعی فرق ہے تو دوسری طرف کچھ طاقتیں ایسی ہیں جو نصاب تعلیم کو منفی مقاصد کے لئے استعمال کررہی ہیں اور خاص کر مسلمانوں کے خلاف ذہن سازی میں اپنی  پوری طاقت صرف کئے ہوئے ہیں ۔   امریکہ میں وہاں کے سینئر فوجی افسروں کے لئے مسلم دشمنی کا خاص کورس اسی زمرہ میں آتا ہے ۔ اس کورس کی تیاری اور اس کی منظوری میں ظاہر ہے ایک سے زیادہ ذہن لگے ہوں گے۔ یہ کورس کافی دنوں تک چلتا رہا اور اس پر اعترا ض ہونے کے بعد ہی اسے بند کیا گیا، جس کا مفہوم یہ ہے کہ سماج کے لئے قابل اعتراض اور تباہ کن چیز کی نشاندہی کی فکر ہر کسی کو نہیں ہوتی ہے۔

 

تعلیم یافتہ ہندوستانی مسلمانوں کا علمی  اختلاف رائے : آر ٹی ای بمقابلہ نا معقول فتاویٰ
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam
مرکزی دھارے کی ہندو برادری کئی اہم اصلاحات کے دور سے گزر رہی ہے اور ان میں سے کئی قرآنی پیغامات کے عین مطابق ہیں، جن میں خاص طور سے  ذات پات کے نظام کے خاتمے، خواتین کو وراثت میں حق دینے کے لئے، ایک بیوہ کی دوبارہ شادی کے حق وغیرہ ہیں۔ دوسری طرف ہندوستانی مسلمان اصلاحات کی مخالفت کر رہے ہیں ٹھیک اسی طرح جیسےان کے  آبا و اجداد نے برطانوی ہندوستان میں کیا تھا جس کے نتیجے میں ہندوستان سے  ان کو خود مسلط اخراج، اور جس نے بین مذہبی نفرت اور فسادات کی فضا کو  پیدا کرنے میں مدد کی تھی۔  اگر مسلمان مرکزی دھارے میں شامل ہندو طبقے کی ترقی پسندی کے تیز اقدام کے ساتھ ساتھ چلنے کو  برقرار رکھنے میں ناکام رہتے ہیں تو  وہ ہندوستانی معاشرے کے اچھوت اور مغلوب کے طور پر ختم ہو جائیں گے اور ان لوگوں کے قہر کا شکار ہوں  گے جو ہندوستان  کو  چمکانا چاہتے ہیں اور  تعلیم یافتہ مسلمان اس خود عائد تباہی کے لئے اکیلے ذمہ داری ہوں گے۔

 

اسلام کا اصل پیغام: نیکی، سماجی ذمہ داری، بین العقائد تعلقات، مذہبی رواداری، انصاف اور ایمانداری کے ساتھ گناہ پر قرآن سے رجوع کریں

اور جو لوگ اپنے رب کی رضاجوئی کے لئے صبر کرتے ہیں اور نماز قائم رکھتے ہیں اور جو رزق ہم نے انہیں دیا ہے اس میں سے پوشیدہ اور اعلانیہ (دونوں طرح) خرچ کرتے ہیں اور نیکی کے ذریعہ برائی کو دور کرتے رہتے ہیں یہی وہ لوگ ہیں جن کے لئے آخرت کا (حسین) گھر ہے" (13:22) ۔ “آپ برائی کو ایسے طریقہ سے دفع کیا کریں جو سب سے بہتر ہو، ہم ان (باتوں) کو خوب جانتے ہیں جو یہ بیان کرتے ہیں (23:96) ۔ " اور نیکی اور بدی برابر نہیں ہو سکتے، اور برائی کو بہتر (طریقے) سے دور کیا کرو سو نتیجتاً وہ شخص کہ تمہارے اور جس کے درمیان دشمنی تھی گویا وہ گرم جوش دوست ہو جائے گا"(41:34) ۔

 
فتوی کو تبدیل کیا جا سکتا ہے
اصغر علی انجینئر (ترجمہ نیو ایج اسلام

فتوی کو تبدیل کیا جا سکتا ہے
Asghar Ali Engineer

یہ سب سینکڑوں سال پہلے لکھی گئی کتابوں اور  جاری کئے گئے فتوی پر مبنی ہے اور ہمارے علماء کرام ان تحریروں سے انحراف کرنا نہیں چاہتے ہیں۔  جب بھی ان سےکوئی سوال پوچھا جاتا ہے تو یہ ان تحریروں سے رجوع کرتے ہیں اور ایک فتویٰ جاری کرتے ہیں اور پھر عدالت کے فیصلے کی طرح یہ فتوی بعد کے فتوی کے لئے نظیر بن جاتا ہے اور یہ فتویٰ عالمی اطلاق والے تصور کئے جانے لگتے ہیں۔ عام مسلمانوں کو پتہ نہیں ہے کہ یہ فتوی صرف مفتی حضرات کی ظاہر کی گئی محض رائے ہے اور  ان کی پابندی  لازمی نہیں ہیں۔

مسلم معاشرے میں طلاق کا بڑھتا ہوا رجحان
Maulana Nadimul Wajidi
مسلم معاشرے میں طلاق کے واقعات بڑھتے جارہے ہیں ، یہ ایک تشویش ناک صورت حال ہے، نکاح اس لیے نہیں کیا جاتا کہ طلاق کے ذریعے اس کو ختم کردیا جائے، شریعت کی نگاہ میں یہ ایک اہم معاملہ ہے، جس میں دوام اور استمرار مطلوب ہے، اسی لیے نکاح کو محض ایک عقد یا معاملہ ہی نہیں رکھا گیا بلکہ اس کو سنت انبیا قرار دے کر عبادت کا درجہ بھی دیا گیا ، دوسری طرف بعض ناگزیر حالات میں طلاق کی اجازت تو دی گئی مگر اسے ابغض المباحات (جائز چیزوں میں سب سے زیادہ نا پسندیدہ چیز ) قرار دے کر یہ بھی واضح کردیا گیا کہ اللہ تعالیٰ کو طلاق بالکل پسند نہیں ہے، البتہ اگر حالات ایسے پیدا ہوجائیں کہ طلاق کے بغیر چارہ نہ رہے تب بلاشک طلاق کا حق استعمال کیا جائے، بات ، بے بات طلاق دینا غضب الہٰی کو دعوت دینے کے مترادف ہے، حدیث شریف میں ہے کہ ‘‘نکاح کرو، طلاق نہ دو، اس لیے کہ طلاق دینے سے عرش الہٰی لرز اٹھتا ہے’’۔ (تفسیر القرطبی :8/149)

 
اسلام کو قرآن کی طرف واپس لائیں
سیف شاہین، نیو ایج اسلام

اسلام کو قرآن کی طرف واپس لائیں
اسی طرح قرآن  بار بار مذہب میں کسی بھی جبر سے منع فرماتا ہے (2:256، 50:45، - 2288:21) اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے فرماتا ہے کہ  وہ لوگوں کو  اپنے راستے کی پیروی کرنے پر مجبور نہ کریں۔ یہ بھی حکم دیتا ہے کہ  مسلمان،  غیر مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک نہ کریں (4:94) اور خدا کے علاوہ جن لوگوں کو یہ لوگ پکارتے ہیں ان کی توہین مت کرو (6:108) اگرچہ یہ وہ عمل نہیں تھا جو طالبان نے کیا جب ان لوگوں نے بامیان میں  بدھ کے مجسمہ کو تباہ کر دیا، یا خود ساختہ اسلامی جہادی جب وہ مندروں، گرجا گھروں اور  یہودیوں کی عبادت گاہوں کو نشانہ بناتے ہیں۔ ایک بہت اہم آیت (5:48) میں ذکر ہے: "ہم نے تم میں سے ہر ایک کے لئے الگ شریعت اور کشادہ راہِ عمل بنائی ہے، اور اگر اﷲ چاہتا تو تم سب کو (ایک شریعت پر متفق) ایک ہی امّت بنا دیتا لیکن وہ تمہیں ان (الگ الگ احکام) میں آزمانا چاہتا ہے جو اس نے تمہیں (تمہارے حسبِ حال) دیئے ہیں، سو تم نیکیوں میں جلدی کرو۔ اﷲ ہی کی طرف تم سب کو پلٹنا ہے، پھر وہ تمہیں ان (سب باتوں میں حق و باطل) سے آگاہ فرمادے گا جن میں تم اختلاف کرتے رہتے تھے ۔"

فتویٰ قرآن کی عبارت نہیں ہے
ڈاکٹر ظفر الاسلام خان (ازہری

فتویٰ قرآن کی عبارت نہیں ہے
Dr. Zafarul-Islam Khan

بعض مفتیان کرام نے حالت نشہ میں دی گئی طلاق کے جواز پر اعتراض کرنے والوں کے خلاف سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے یہاں تک کہہ ڈالا ہے کہ’’قرآن کی لکھی ہوئی عبارت کبھی غلط نہیں ہوتی‘‘۔ یہ انتہائی غلط بیان اور تعصب کی بات ہے۔مذکورہ فتوی کسی بھی صریح آیتِ قرآنی پر مبنی نہیں ہے ورنہ کسی مؤمن کے لئے اس کے بارے میں اعتراض کی گنجائش نہیں تھی۔  معاملہ ایک فقہی رائے کا ہے جس پر امت کا اجماع نہیں ہے۔  جہاں امام مالکؒ اور امام ابوحنیفہؒ نشہ کی حالت میں طلاق کے جوازکے قائل ہیں وہیں امام احمدؒ ، امام شافعیؒ اپنے ایک قول میں اور ظاہری اس قسم کی طلاق کے جواز کے قائل نہیں ہیں۔

تر جیحات دین
مولانا حفیظ الرحمٰن اعظمی عمری

حج اسلام کا پانچواں رکن ہے، لیکن یہ انفرادی کام ہے، جب کہ دفاعی قوت کی تیاری کا تعلق پوری ملت سے اور قومی عزت وسلامتی سے ہے۔ ہمارے اہل علم نے حج وعمرہ پر پورا زور صرف کیا ۔اس کے نیتجے میں آج حج پر حج اور عمرہ پر عمرہ کرنے والے نظر آتے ہیں ۔ اگر پابندیاں نہ ہوتیں تو شاید کروڑوں مسلمان ارض ِ حرم میں حج وعمرہ کی ادائیگی کے لیے ہمیشہ حاضر رہتے۔ لیکن واعد و الھم ما استطعتم ۔ کے قرآنی حکم کو ہم نےنظر انداز کردیا۔ یہ دین و ملت کے تحفظ کے لیے کتنا ناگزیر تھا، اس طرف توجہ نہیں دی گئی اور اللہ تعالیٰ نے اس کا جو فائدہ بتایا تھا : و انتم لا تظلمون ‘‘ تم ظلم نہیں کئے جاؤگے’’ ، اسے ہم نے قابل اعتنا نہیں سمجھا ۔نتیجہ یہ ہوا کہ آج ہم مسلمان دشمن کے لیے ہر جگہ تو نوالا بنے ہوئے ہیں اور ہمارا خون دنیا میں سب سے زیادہ سستا ، بلکہ ہر جگہ بے قیمت ہوکر رہ گیا ہے۔ ترجیحات دین سے غفلت اور اس کے انجام کی یہ ایک مثال ہے۔ ایسی بے شمار مثالیں غور کرنے پر ہم کو ملیں گی۔

پاکستان:  بڑھتی ہوئی کش مکش اور مذہبی قوتیں
Mujahid Hussain writes a regular weekly column for New Age Islam
دفاع پاکستان کونسل کی قیادت اچھی طرح جانتی ہے کہ پاکستان کی روایتی انتخابی سیاست میں اُس کی جگہ نہیں ہے اور وہ اپنے مسلح اور تربیت یافتہ مجاہدین اور فدائین کے ذریعے آسانی کے ساتھ اقتدار حاصل نہیں کرسکتی۔ دفاع پاکستان کونسل کی قیادت کو اچھی طرح علم ہے کہ پاکستانی فوج کی اعلیٰ قیادت پاکستان میں متشدد مذہبی انقلاب سے بدکتی ہے اور ابھی فوج میں ایسے لوگوں کی تعداد بہت کم ہے جو مبینہ طور پر حزب التحریر سے جڑے بریگیڈئر علی خان جیسا سوچتے ہیں اور اپنے سوچے ہوئے پر عمل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہمیں بعض اوقات متشدد دائیں بازو کے اخبارات و رسائل میں ایسے مضامین دیکھنے کو ملتے ہیں جن میں اس بات پر بھرپور تاسف کا اظہار کیا گیا ہوتا ہے کہ پاکستان کی فوج میں محمد بن قاسم جیسے لوگوں کی کمی کیوں ہے۔

 

رشتہ ازدواج سے باہر جنسی تعلقات کے لئے خواتین کو کوڑے مارنا سفاکانہ اور غیر اسلامی عمل ہے
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam

 "اے نبی! جب آپ کی خدمت میں مومن عورتیں اس بات پر بیعت کرنے کے لئے حاضر ہوں کہ وہ اللہ کے ساتھ کسی چیز کو شریک نہیں ٹھہرائیں گی اور چوری نہیں کریں گی اور بدکاری نہیں کریں گی اور اپنی اولاد کو قتل نہیں کریں گی اور اپنے ہاتھوں اور پاؤں کے درمیان سے کوئی جھوٹا بہتان گھڑ کر نہیں لائیں گی (یعنی اپنے شوہر کو دھوکہ دیتے ہوئے کسی غیر کے بچے کو اپنے پیٹ سے جنا ہوا نہیں بتائیں گی) اور (کسی بھی) امرِ شریعت میں آپ کی نافرمانی نہیں کریں گی، تو آپ اُن سے بیعت لے لیا کریں اور اُن کے لئے اللہ سے بخشش طلب فرمائیں، بیشک اللہ بڑا بخشنے والا نہایت مہربان ہے"(60:12) ۔

 

پاکستان کی غیر مسلم اقلیتوں کے لئے انصاف کی فراہمی اور تحفظ کا معاملہ اور بہتر امیج کا سوال
Maulana Abdul Hameed Nomani
پاکستان  کی شبیہ ایک اسلامی یا مسلم ملک کے طور پر ایسی نہیں ہے کہ کوئی ایماندار ، منصف مزاج آدمی اسے قابل تقلید ونمونہ قرار دے سکے، بلکہ اسلام اور مسلمانوں کی نیک نامی میں بھی آج تک کوئی کردار ادا نہیں کیا ہے، جس کے حوالے سے اسلام اور مسلمان بہتر حیثیت میں قابل توجہ ہوجائے اور واقعہ یہ ہے  کہ اسلامی دنیا خصوصاً ہندوستانی مسلمانوں کے لیے پاکستان اور اہل پاکستان کبھی بھی نمونہ اور ماڈل نہیں رہے ہیں، لیکن یہ افسوس ناک بات یہ ہے کہ وہ کسی نہ کسی طرح دوسروں کے لیے اسلام  اور مسلمانوں کو مطعون کرنے کے لیے دلیل اور نمونہ کے حوالے سے استعمال کیے جاتے رہے ہیں ۔

 

قدیم اسلامی قانون کی  لعنت و ملامت کرنے والوں میں نیوٹ گنگ رچ اکیلے نہیں
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam
لیکن اگر مسلمان مذہبی قیادت مذہبی عقیدے کے بنیادی اصولوں اور قرآن پاک کی آفاقی اقدار پر  دوبارہ غور کرتے ہیں اور اس کے مذہبی گفتگو کو  تاریخی تناظر میں دیکھتے ہیں تو اسلام  کے لئے سیکولرائزیشن، گلوبلائزیشن اور مغربی معاشرے کے ساتھ وسیع تر میل جول کرنے کا بہت اچھا موقع ہے۔" وقت آ گیا ہے کہ مسلمانوں  کے اعلیٰ طبقے اور  لیڈران قدیم اسلامی شرعی قانون کو جدید اسلامی قانون (شرعی) سے تبدیل کریں جس میں مغربی سیکولر اقدار  شامل ہو  اور جو قرآن کے وسیع دائرے میں  ہو۔ اس عمل میں دیری یا  کوئی رعایت خالد ابو الفضل کی تشویش کو مزید تقویت پہنچائے گی، ‘کیا یہ ممکن ہے کہ وہ دن آئے گا جب ہمارا تذکرہ ختم ہو جانے والی تہذیبوں میں ہوگا’۔

 

اسلامی رسومات میں ترمیم کی ضرورت پر ایم حسین صدر کے مضمون پر محمد یونس کا رد عمل
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam

مسئلہ مسلم دانشوروں کے ساتھ ہے۔ وہ قدامت پسندوں اور علماء کو اسلام میں رسوم و رواج اور علامت کو ختم کرنے کے لئے کہتے ہیں اور یہ جانے بغیر کہ وہ ایسا نہیں کریں گے کیونکہ وہ اس کے معمار اور واحد نگراں اور ان مذہبی معاملوں سے فائدہ اٹھانے والے ہیں۔ اگر وہ اصلاح چاہتے ہیں تو  انہیں قدامت پسندی اور علماء کو  ان کے ہی انداز میں چیلنج کرنا ہوگا اور انیں قرآن کا گہرائی سے مطالعہ کرنا ہوگا۔ تب انہیں احساس ہوگا کہ  رسومات اور علامتوں کے لئے محدود مقام ہے اور  یہ کئی سماجی، اخلاقی اور عالمگیر مثالوں کو واضح کرے گا جو انہیں 21ویں صدی کے چیلنجوں سے نمٹنے میں مددگار ثابت ہوگا۔

 

قرآن کریم جلانے سے مٹ نہیں سکتا
Maulana Nadimul Wajidi
بدنام زمانہ ملعون امریکی پادری ٹیری جونز نے ایک بار پھر اپنی خباثت کا مظاہرہ کرتے ہوئے قرآن کریم کی بے حرمتی کی ہے،اور اس مقدس آسمانی صحیفے کو نذرآتش کر کے دنیا بھر کے مسلمانوں کے دلوں میں مجروح کیا ہے، اس شیطان صفت پادری نے اس سے پہلے بھی 20مارچ 2011کو یہ مکر وہ حرکت کی تھی، اور تیس پادریوں کی موجودگی میں قرآن کریم کے نسخے کو آگ کے حوالے کیا تھا، ا س وقت کیوں کہ اس کے خلاف امریکی حکومت نے کوئی کارروائی نہیں کی تھی، ا س سے حوصلہ پاکر ا س کم بخت نے دوبارہ یہ حرکت کی ہے، اس واقعہ کا سب سے اہم پہلو یہ ہے کہ اس شخص نے یہ بدبختانہ کارروائی کسی بند کمرے میں انجام نہیں دی، اس  نے یہ غلیظ حرکت علی الا علان کی ہے، بلکہ امریکی جریدے ‘‘کرسچن پوسٹ’’ کی ایک رپورٹ کے مطابق ٹیری جونز نے اپنے ناپاک منصوبے پرعمل کرنے سے پہلے امریکی کاؤنٹی گینسو ائل فائر ڈپارٹمنٹ سے باقاعدہ اجازت طلب کی تھی.

قرآن سوزی کی حرکت
ڈاکٹر راحت مظاہری

پادری پاسٹر ٹیری جونس کے ذریعہ مئی 2012میں قرآن سوزی کی حرکت کو اگر عیسائی مذہب کی روشنی اور عیسائیت کےمطالعہ کی روشنی میں بھی دیکھا جائے تو حقیقت یہ ہے کہ مذکورہ پادری کی اس مزموم حرکت سے نہ صرف مسلمانان عالم کے دلوں کو ایک بڑا صدمہ پہنچا ہے بلکہ حضرت یسوح مسیح کی شان میں بھی بڑی گستاخی انجام دی گئی ہے، حالانکہ عیسائی دنیا کی جانب ابھی اس اقدام کی مذمتی خبریں بھی موصول نہیں ہوسکیں ،کیو نکہ دنیا جانتی ہے کہ قرآن کریم اللہ کا ایک ایسا کلام ہے ، جہاں اس میں قیامت تک آنے والے انسانوں کو خدائی احکامات کی تعلیم پیش کی گئی ہیں۔

 

طلاق شدہ خواتین کے نان و نفقہ کوایّام عدت تک ہی محدود کرنا غیر اسلامی ہے
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam

" اور اگر تم نے انہیں چھونے سے پہلے طلاق دے دی درآنحالیکہ تم ان کا مَہر مقرر کر چکے تھے تو اس مَہر کا جو تم نے مقرر کیا تھا نصف دینا ضروری ہے سوائے اس کے کہ وہ (اپنا حق) خود معاف کر دیں یا وہ (شوہر) جس کے ہاتھ میں نکاح کی گرہ ہے معاف کردے (یعنی بجائے نصف کے زیادہ یا پورا ادا کردے)، اور (اے مَردو!) اگر تم معاف کر دو تو یہ تقویٰ کے قریب تر ہے، اور (کشیدگی کے ان لمحات میں بھی) آپس میں احسان کرنا نہ بھولا کرو، بیشک اﷲ تمہارے اعمال کو خوب دیکھنے والا ہے"(2:237) ۔

شادی کے بغیر نوکرانیوں اور طوائف وغیرہ کے ساتھ جنسی تعلق کے  جوازمیں نقل کی جانے والی قرآنی آیات پر نئی بصیرت
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam

زیادہ تر مبصرین نے ہدایات والی آیات کو لفظ پرستی اور ایک مخصوص صنفی طریقے سے ترجمہ کیا ہے جو ایک آدمی کی تاریخی تناظر میں غلام / قیدی خواتین اورنوکرانیوں اور آج کے تناظر میں کال گرلز وغیرہ کے ساتھ جنسی تعلقات کو جائز ہونے کی منشاء کا اظہار کرتی ہیں۔ یہ وسیع تر قرآنی پیغام کے خلاف ہے، اور شادی سے متعلق اس کے قوانین کو یہ مذاق بناتا ہے۔ .".. اور اگر تمہیں اندیشہ ہو کہ تم یتیم لڑکیوں کے بارے میں انصاف نہ کر سکو گے تو ان عورتوں سے نکاح کرو جو تمہارے لئے پسندیدہ اور حلال ہوں، دو دو اور تین تین اور چار چار (مگر یہ اجازت بشرطِ عدل ہے)، پھر اگر تمہیں اندیشہ ہو کہ تم (زائد بیویوں میں) عدل نہیں کر سکو گے تو صرف ایک ہی عورت سے (نکاح کرو) یا وہ کنیزیں جو (شرعاً) تمہاری ملکیت میں آئی ہوں، یہ بات اس سے قریب تر ہے کہ تم سے ظلم نہ ہو"(4:3)

 

اقبال کی نظر میں اجتہاد کی اہمیت

اقبال کو اس بات کی  شدید قلق رہا کہ عوام الناس کی مذہبی تعلیم و تربیت کی ذمہ داری جن مولوی حضرات پر ہے وہ بوجوہ نامکمل تعلیم یافتہ اور بیشتر صورتوں میں اپنے حقیقی منصب کے اہل نہیں ہوتے۔ اپنے مضمون ‘‘قومی زندگی’’ میں ایسے ہی مولوی صاحبان کا ذکر کرتے ہوئے لکھتے ہیں ۔مولوی صاحبان کی یہ حالت ہے کہ اگر کسی شہر میں اتفاق سے دوجمع ہوجائیں تو حیات مسیح یا آیات ناسخ ومنسوخ پر بحث کرنے کےلئے باہمی نامہ وپیام ہوتے ہیں اور اگر بحث چھڑ جائے اور بالعموم بحث چھڑ جاتی ہے تو ایسی جوتیوں میں دال بٹتی ہے کہ خدا کی  پناہ۔...

 

قرآن سوزی کے بڑھتے واقعات سے مسلمان اشتعال میں نہ آئیں
Abid Anwar is a freelance journalist.
جب بھی کسی ترقی یافتہ ، صنعت و حرفت سے مالامال اور خوش حال قوم پرتباہی آتی ہے تو قدرت اس سے ایسے ایسے اقدامات کرواتی ہے اور ایسے اعمال سرزد کرواتی ہے جو بہ ظاہر اس کی شان کو دوبالا کرنے والااور اس کے عظیم تر ہونے کے ثبوت دیتے ہیں لیکن درحقیقت اس قوم کی تباہی کی بنیادی رکھی جارہی ہوتی ہے لیکن وہ قوم طاقت کے نشہ میں اس قدر چور ہوتی ہے کہ اسے کچھ بھی نظر نہیں آتا۔ قومیں کامیابی کے مدارج اس وقت طے کرتی ہیں جب ان کی توجہ تعلیم، اقتصادیات اور معاشرتی فلاح و بہبود پر مرکوز ہو۔

 

قرآن میں ترمیم کبھی نہیں کی گئی اور قرآن میں کسی بھی طرح کی ترمیم کی کوشش خود متضاد ہو جائے گی
Muhammad Yunus is an Islamic Scholar and columnist for New Age Islam

اور اگر تم اس (کلام) کے بارے میں شک میں مبتلا ہو جو ہم نے اپنے (برگزیدہ) بندے پر نازل کیا ہے تو اس جیسی کوئی ایک سورت ہی بنا لاؤ، اور (اس کام کے لئے بیشک) اللہ کے سوا اپنے (سب) حمائتیوں کو بلا لو اگر تم (اپنے شک اور انکار میں) سچے ہو (2:23) ۔ پھر اگر تم ایسا نہ کر سکو اور ہرگز نہ کر سکو گے تو اس آگ سے بچو جس کا ایندھن آدمی (یعنی کافر) اور پتھر (یعنی ان کے بت) ہیں، جو کافروں کے لئے تیار کی گئی ہے"(2:24)۔

 

مگر عجیب بات ہے، دنیا کے مسلمان اندلس کے نام پر عورتوں کی طرح رونے والے مسلمان مردوں کے آنسو جمع کئے جائیں تو ایک نیا بحر ظلمات بن سکتا ہے، مگر یہ مردان اشکبار اگر اس بعد بھی کچھ کار مرداں کر دکھاتے تو یہ تاریخ ابو عبداللہ محمد کی بنائی ہوئی تاریخ سے مختلف بھی ہوسکتی تھی. سچ پوچھئے تو جہاں جہاں مَردوں نے مردانگی کے جوہر کو شبستانوں میں ضائع نہیں کیا تھا وہاں وہ تاریخ بنی بھی جو ابو عبداللہ اور اس جیسے حکمرانوں کو شرم دلانے کے لئے کافی تھی۔....

 

تکفیر مسلم کا مظہر اس کے مضمرات
Waris Mazhari
دین میں غلو اور تشدد ، جن کی قرآن وحدیث میں شدید ممانعت آئی ہے کا، ایک اہم مظہرتکفیرمسلم کا مظہر ہے۔ مسلم سماج میں داخلی سطح پر انتشار و افتراق، دوسرے مسالک و مذاہب کے تئیں عدام رواداری اور تشدد پسندی کے فروغ میں اس مظہر کا اہم کرداررہا ہے۔اس مقصد کے لئے اسے ایک بڑے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا گیا۔ شخصی اور جماعتی اختلافات نے علم و اخلاص کے دائرے سے باہرنکل کر جب بھی شدت اختیار کی، اس کا نقطہ عروج دوسرے افراد یا جماعت کی تکفیر اور نتیجہ باہمی جنگ و جدال کی شکل میں سامنے آیا۔

 
حضرت مجدد الف ثانی شیخ احمد سرھندی
سید نظیر احمد مسجد پنچ پیر جالندھر

حضرت مجدد الف ثانی نے ابتدائی تعلیم اپنے والد بزرگوار حضرت شیخ عبدالاحد سے حاصل کی۔ آپ نے قرآن پاک تھوڑے ہی عرصہ میں حفظ کر لیا۔ اعلی تعلیم حاصل کرنے کے لئے آپ سیالکوٹ تشریف لے گئے۔ وہاں مولانا کمال الدین کشمیری اور شیخ محمد یعقوب کا شمیری جیسے بزرگوں سے پڑھ کر سند حاصل کی۔ آپ نے بالغ ہونے سے قبل تمام ظاہری علوم سے فراغت حاصل کر لی۔ وہاں علماءدین سے ملاقات کی وہ آپ آگرہ چلے گئے ان دنوں وہاں علماءکی بہت شہرت تھی۔ وہاں علمائے دین سے ملاقات کی وہ آپ کی قابلیت اور ذہانت دیکھ کر بہت متاثر ہوئے۔ یہی وجہ ہے بہت سارے علماءآپ کی مجلس درس میں حاضر ہوئے۔ ....

 

سماجی اور صنفی انصاف اور  ناقابل تخفیف مذہبی تکثریت کے متعلق ، ترقی پسند مسلمانوں کے افکا رو نظریات کی نمایاں خصوصیات
Dr. Adis Duderija

ترقی پسند مسلمان کے نظریے کے حامی مسلم اور غیر مسلم دنیا بھر میں پھیل جائیں۔ کئی معروف ترقی پسند مسلمان دانشور  مغرب میں رہتے ہیں اور مغربی یونیورسٹیوں میں تعلیم دیتے ہیں۔ ان میں سے بعض نے ان اداروں سے گریجویٹ اور پوسٹ گریجویٹ کی ڈگری حاصل کی ہے، اور بعض صورتوں میں، اسلامی علوم میں بھی روایتی تربیت حاصل کی ہے. صفی کے الفاظ میں: اپنے آزاد خیال مسلمان آباؤ اجداد کے برعکس، ترقی پسند مسلمان،  خاتون اور مرد مسلم سرگرم کارکنوں اور دانشوروں کے ایک وسیع اتحاد کی نمائندگی کرتے ہیں۔

 
1 2 ..35 36 37 38 39 40 41 42 43 44 ... 61 62 63
Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Videos

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on forced conversions to Islam in PakistanPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

NEW COMMENTS