certifired_img

Books and Documents

Urdu Section

Spiritual Significance of Divine Oaths in the Holy Quran  قرآن مجید میں الہٰی قسموں کی روحانی  اہمیت و افادیت
Kazi Wadud Nawaz, New Age Islam

قرآنی قسمیں، اس سے قطع نظرکہ قسم کس چیز کی کھائی جا رہی ہے قیامت، فرشتے، جنت، جہنم، نیکی کے لیے جزا اور بدی کے لیے سزا جیسی غیبی حقائق کے بارے میں انسانی دماغ کو شک و شبہ اور الجھن سے آزاد کرنے کے لیے ایک پرخلوص اور خوش آئند الہی کوشش ہے۔ الٰہی قسموں کا عنوان جن اشیاء کو بنایا گیا ہے وہ الہی نظام حکومت کو منظم کرنے پر مامور ہیں۔ یہ الہی نشانیاں قرآن کے مطابق مظاہر فطرت میں اور خود ہمارے اندر بھی اللہ اور اس کے بندوں کے درمیان کہ جنہیں زمین پر اس نے اپنی خلافت و نیابت سے نوازا ہے ذرائع ابلاغ کی حیثیت سے عیاں ہیں۔یہ ایک ابدی حقیقت ہے کہ ہمارے جسم کے ہر خلیے، ہمارے خون کا ہر قطرہ، ہمارے دل کی ہر دھڑکن اللہ کی عظمت اور اس کی حاکمیت کی گواہی دیتی ہے۔

 

Difference between Dawah Work and Social Work  دعوتی خدمات اور خدمت خلق کے درمیان فرق
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

تبلیغ دین اور خدمت خلق کے درمیان ایک بنیادی فرق یہ ہے کہ داعی الی اللہ خدا کے ساتھ ایک قریبی تعلق قائم کر لیتا ہے۔ اس کے کام میں مصروف عمل رہتے ہوئے وہ اکثر خدا کو یاد کرتا ہے۔ وہ خدا سے دعا کرتا ہے۔ وہ خدا سے ہدایت طلب کرتا ہے۔ اس کے برعکس خدمت خلق میں تمام سرگرمیاں لوگوں کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کے لیے ہوتی ہیں۔ اور اس کی ساری توجہ لوگوں پر ہوتی ہے۔

 

Religious significance of Friendship for God and enmity for God  اللہ کے لیے دوستی اور اللہ کے لیے دشمنی کی دینی اہمیت و افادیت
Misbahul Huda, New Age Islam

اور قربان جائیں اللہ کی شان کریمی پر کہ اس نے فرمایا کہ ’’اے میرے پیارے بندوں! تم عمر بھر میں نیکی ، عبادت و ریاضت، تقویٰ و پرہیزگاری اور میری راہ میں جد و جہد صرف اس لیے کرتے ہو کہ تمہیں میرا تقرب حاصل ہو جائے اور میں تم سے راضی ہو جاؤں، جبکہ میں نے (اپنے فضل و احسان) سےاس انسان کی محبت اپنے اوپر لازم کر لی ہے جو میرے لیے ایک دوسرے سے محبت کرتے ہیں ، میرے لیے ایک دوسرے کے ساتھ اٹھتے بیٹھتے ہیں، میرے لیے ایک دوسرے سے ملاقات کرتے ہیں اور ملتے جلتے ہیں اور میری محبت میں ایک دوسرے پرخرچ کرتے ہیں۔

 

Who Are Those Who Will Believe And Those Who Will Not?  کون ایمان لانے والے ہیں اور  کون نہیں؟
Naseer Ahmed, New Age Islam

قرآن انسانی رویے کے قوانین کو بیان کرتا ہے لیکن خدا ساتھ ہی ساتھ وہ اپنی سنت بھی بیان فرماتا ہے۔ ایسا اس لیے ہے کہ خدا کے یہ قوانین اٹل اور ناقابل تغیر ہیں جو سختی کے ساتھ مسلسل اور غیر متبدل انداز میں رواں دواں ہیں۔ لوگ اسے لغوی انداز میں سمجھتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ اگر خدا لوگوں کو گمراہ ہونے کی اجازت دیتا ہے یا ان کے دلوں پر مہر لگاتا ہے جس کے نتیجے میں وہ "بہرے، گونگے اور اندھے" ہو جاتے ہیں تو پھر اسے  کس طرح اس کا ذمہ دار ٹھہرایا جا سکتا ہے ؟ یہ بھی نفس کا فریب ہے اور اس اخلاقی نظام زندگی کی ذمہ داری لینے کی ناقابلیت کی علامت ہے جس کا انتخاب انہوں نے خود  کیا ہے جبکہ خدا مسلسل انہیں اس بات کی یاد دہانی کراتا ہے کہ:

 

قرآن مجید کی سورتوں کے ناموں کو اکثر لوگ جانتےہیں مگر کچھ ایسی آیات بھی ہیں جن کے مفسرین نے نام رکھے ہیں اور وہ تفسیر کرتے ہوئے ان کے باقاعدہ نام لیتےہیں ۔ اور آیات کے نام رکھے بھی جاسکتے ہیں جیسا کہ بعض آیات کے نام نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ کرام رضی اللہ عنہ سےبھی ثابت ہیں ۔ عربی تفاسیر کے مطالعے کے دوران ان آیات کا نام لیا جاتاہے مگر ان کا علم نہ ہونے کی وجہ سےفہم میں خلا رہ جاتا ہے۔ اسی ضرورت کے تحت وہ آیات پیش کی جاتی ہیں جن کے نام مفسرین کے ہاں متداول ہیں اور ساتھ ہی ان آیات کے سبب نزول، مختصر احکام اور نکات درج کئے جاتےہیں ۔

 

The Misrepresentation of the Quran through Mistranslation  ترجمہ نگاری کے ذریعے قرآن مجید میں تحریف
Naseer Ahmed, New Age Islam

قرآن مجید میں ایک بھی ایسی آیت نہیں ہے جس میں مشرکین کی لعنت و ملامت کی گئی ہو یا جس میں اس بات کا ذکر ہو کہ انہیں جہنم میں ڈالا جائے گا۔ قرآن میں ہر مقام پر صرف کافروں کے لیے جہنم کی وعیدیں وارد ہوئی ہیں۔ پورے قرآن میں صرف دو ہی آیات ایسی ہیں جن میں یہ کہا گیا ہے کہ شرک ایک ناقابل معافی گناہ ہے لیکن وہ آیات بھی یہودیوں اور مسلمانوں کے تناظر میں ہیں۔ اس لیے کہ یہودیوں اور مسلمانوں کا شرک کرنا ان کے مذہب کی واضح اور معروف اصولوں کے خلاف کانے کے مترادف ہوگا جس کی وجہ سے یہ ایک ناقابل معافی گناہ ہے۔ لیکن دوسروں کا معاملہ یہ ہے کہ کافر صرف ان لوگوں کو کہا جائے گا جو جان بوجھ کر سچائی کا انکار کرتے ہوں اور اسی حالت میں ان کی موت واقع ہو جائے۔ اور جو لوگ "سچائی" کو جاننے سے پہلے ہی مر جائیں وہ کافر نہیں ہیں۔

 

Uniform Civil Code or Islamic Reform?  یکساں سول کوڈ یا اسلامی اصلاح؟
Arshad Alam, New Age Islam

لہذا، اس صورت حال میں ریاست کا کردار اہم ہو جاتا ہے۔ ریاست کی حمایت کے بغیر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے پدرانہ اسلام کو مسلم خواتین کی ایک جماعت کے ذریعہ پیش کیے گئے چیلنج کی کامیابی کے بارے میں کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا۔ ان خواتین کی تنظیم کے مقصد پر سوال اٹھانے والوں کو یہ سمجھنا چاہیے کہ تاریخی طور پر اصلاحات کے حوالے سے تمام تحریکوں کو کامیابی صرف اسی لیے ملی ہے کیوں کہ اس طرح کے مطالبات کو ریاست کی زبردست حمایت حاصل ہوتی ہے۔ اگر آج مسلم خواتین کی جماعتیں ریاستی حمایت طلب کر رہی ہیں تو اس میں کچھ بھی غلط نہیں ہے۔ اس کے علاوہ، ان کی مہم کو پہلے مسلم مذہبی اداروں میں نشانہ بنایا گیا تھا۔ ہندوستان میں اسلام کے محافظوں نے جب ان کے اس مہم کی مخالفت کی تب جا کر حقوق خواتین کے ان کارکنوں نے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا اور وہ ایسا کرنے میں بالکل حق بجانب ہیں۔

 

Negative Effects of bad Company  بری صحبت کے برے اثرات اور غلط نتائج
Misbahul Huda, New Age Islam

حضرت ابو رزین رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے ان سے فرمایا: کیا میں تمہیں اس دین کی اساس اور اس کی روح سے واقف نہ کرا دوں کہ جس کے ذریعے تم دنیا و آخرت کی بھلائی حاصل کر سکو؟ ذکر الٰہی میں مشغول رہنے والوں کی مجلس اختیارکرو اور جب خلوت میسر ہو تو جتنا ہو سکے ذکر الٰہی سے اپنی زبان کو تر رکھو،اور صرف اللہ ہی کے لئے کسی سے محبت کرو اور اللہ ہی کے لئے کسی سے بغض بھی رکھو۔ امام غز الی رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں کہ برے دوست کی سنگت اور صحبت انسان کیلئے سانپ اور شیطان سے زیادہ نقصان دہ ہے اس لئے کہ شیطان صرف انسان کے اندر وسوسے ڈالتا ہے اور بہکانے کی کوشش کرتا ہے لیکن ایک بدکار دوست انسان کو برائی کرنے پر مجبور کرتا ہے۔

 

Importance and significance of good and pious companionship  نیک صحبت کی دینی اور معاشرتی اہمیت و افادیت
Misbahul Huda, New Age Islam

حضرت ذوالنون مصری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ فرماتے ہیں کہ جس شخص کے اندر دوسروں کے عیوب تلاش کرنے کی عادت ہو وہ ہمیشہ اپنے عیب کو دیکھنے سے اندھا رہے گا اور جس کی نظر اپنے عیوب و نقائص پر ہو وہ دوسروں کے عیب دیکھنے سے نابینا ہو جائے گا۔ اس سے ہمیں یہ معلوم ہوتا ہے کہ انسان کسی ایک کے ہی عیب پر نظر رکھ سکتا ہے، یا تو دوسروں کے عیوب اور دوسروں کے نقائص پر نظر رکھ سکتا ہے یا خود اپنے عیوب و نقائص پر نظر رکھ سکتا ہے۔ اب یہ ہمارے اوپر ہے کہ کون سا راستہ اختیار کرتے ہیں یاتو ہم اپنے عیوب پر ہمیشہ نظر رکھیں اور زندگی بھر ان کی اصلاح کرتے رہیں اور روحانی ترقی کے منازل طے کرتے چلے جائیں، یا پھر عمر بھر دوسروں کے عیوب و نقائص ہی دیکھتے رہیں اور جب ہم یہ راستہ اختیار کریں گے تو نتیجۃً غیبت اور چغلی میں ملوث ہوں گے، دل میں دوسروں کے لیے بغض و عناد پیدا ہوگا، زبان بھی گندی ہو گی، آپسی تعلقات بھی خراب ہوں گے، لوگوں کی شکایتیں بھی ہوں گی جس کے نتیجے میں فتنہ و فساد کا ماحول پیدا ہو گا اور ہماری زندگی میں صرف شر ہی شر ہو گا؟ لہٰذا، اب فیصلہ ہمارے ہاتھوں میں ہے کہ ہم اپنے عیب پر نظر رکھتے ہیں یا دوسروں کے عیوب و نقائص پر نظر رکھتے ہیں۔

 

There’s Scope for Reconciliation between Islam, Modernity  اسلام اور جدیدیت کے درمیان توازن اور ہم آہنگی کی گنجائش ہے
Zia Haq

حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک ایسی خاتون سے نکاح کیا جن کے تحت آپ ملازمت کیا کرتے تھے اور وہ ایک بیوہ تھیں اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے کافی عمر دراز تھیں۔ لہذا، آج سے 1،400 سال پہلے مسلمان ایک عورت کے ملازم تھے۔ بدقسمتی سے آل انڈایا مسلم پرسنل لاء بورڈ اسلام کے دفاع کے بھی قابل نہیں ہے۔ وہ ایسے معیاری حالات کا تعین بھی کرنے کے قابل نہیں ہیں جن کے تحت مسلمان مرد کو تین مرتبہ لفظ طلاق کہہ کر اپنی بیوی کو طلاق دینے کی اجازت ہے۔ سوال یہ بھی ہے کہ ایسا کیوں ہے کہ جب ایک ہی طلاق کافی ہے تو پھر مسلمان تین مرتبہ لفظ طلاق کیوں کہتے ہیں؟

 

Moral Ethics Of Prayers   اللہ کی بارگاہ سے طلب کرنے کے آداب
Misbahul Huda, New Age Islam

آج اس مادیت زدہ دور میں ہر خاص و عام کو اس بات کی شکایت ہے کہ ہماری دعائیں کیوں قبول نہیں ہوتیں؟ اور ہمیں اللہ کی مدد کیوں نہیں ملتی؟ اس کی وجہ یہ ہے کہ اللہ سے مدد مانگتے وقت ہمارے دلوں کی کیفیت وہ نہیں ہوتی ہے جو ہونی چاہیے تھی، اس کی بارگاہ کا وہ ادب ہم ملحوظ خاطر نہیں رکھتے جو ہمیں رکھنا چاہیے تھا۔ ہم شش و پنج کی کیفیت میں ہوتے ہیں۔ ہمارا دھیان اپنے مال اور اسباب و وسائل پر بھی ہوتا ہے اور پھر ہم اس سے مدد اور دستگیری کی التجا بھی کرتے ہیں۔ ہمارے دلوں میں اپنے علم کا غرور بھی ہوتا ہے اور پھر ہم اللہ سے علم کی خیرات بھی مانگتے ہیں۔ ہمارے دل میں معاشرے کے اندر ہماری عزت اور مقام و مرتبہ کا جھوٹا بھرم بھی ہوتا ہے اور پھر ہم اس سے عزت کی بھیک بھی مانگتے ہیں۔ اولیاء، عرفاء اور صلحاء فرماتے ہیں کہ اللہ کا فرمان ہے کہ حقیقی عزت و کبرائی والا صرف میں ہوں جسے عزت چاہیے وہ عاجزی و انکساری کا پیکر بن کر مجھ سے عزت مانگے۔ حقیقی طاقت اور جلالت والا میں ہوں جسے طاقت چاہیے وہ میری بارگاہ میں کمزور و ناتواں ہو کر طاقت مانگے۔ حقیقی علم والا میں ہوں جو مجھ سے علم چاہتا ہے وہ پہلے اپنی جہالت کا اقرار اور یقین کر لے اس کے بعد مجھ سے علم مانگے۔

 

Emphasis On Arab Or Persian Culture Prevents  ایک عالمی مذہب کے طور پر اسلام کی عدم مقبولیت کی وجہ عرب یا فارسی ثقافت پر اصرار
Asif Merchant, New Age Islam

یہ سب کچھ علما کے ذریعہ پیدا کیے گئے جمود و تعطل کا نتیجہ ہے کہ جن ممالک میں اسلام کا غلبہ ہوا ان کی ترقی رک گئی۔ علماء کی طرف سے ہونے والے نقصان کی ایک کلاسکی مثال پرنٹنگ کے میدان میں مسلمانوں کی پسماندگی ہے۔ پندرہویں صدی میں ایک جرمن جوہانس گوٹینبرگ نے ایک متحرک پرنٹنگ مشین کی ایجاد کی۔ اس نے یورپ میں پرنٹنگ کی دنیا میں ایک انقلاب پیدا کر دیا اور اس کی وجہ سے کسی بھی تعداد میں بہت آسانی کے ساتھ کتابیں اور اخبارات پرنٹ کیے جانے لگے۔اس کے نتیجے میں عام لوگوں کے درمیان علم کو فروغ حاصل ہوا اور یورپ میں سائنس اور ٹیکنالوجی کی ترقی کی رفتار تیز ہو گئی۔ اس وقت مسلمانوں کی سب سے بڑی طاقت ترکی تھی۔ یہاں کے قاضی القضاۃ نے پرنٹنگ پریس کو حرام قرار دیتے ہوئے ایک فتوی جاری کیا تھا۔ اس کے بعد کے حالات تاریخ میں درج ہیں۔ مغرب نے ترقی کی اور ترکی کی سلطنت جمود کا شکار ہوئی اور بالآخر زمیں بوس ہو گئی۔

 
The Greatest Blessing دنیا کی سب سے بڑی نعمت
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

The Greatest Blessing  دنیا کی سب سے بڑی نعمت
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

اس کے لیے ایک انسان کی سب سے پہلی اور اہم ترین ذمہ داری یہ ہے کہ وہ اپنی بیوی کا احترام اور اس کی حقیقی اہمیت کی قدر کرے۔ اسے اس کے اندر پوشیدہ جواہرات کو تلاش کرنا ہوگا۔ اسے اس کی اندرونی خوبصورتی کو دریافت کرنا ضروری ہے۔ ہر عورت کے اندر بے پناہ قدرتی امکانات موجود ہیں اب یہ اس کے خاوند کی قابلیت پر منحصر ہے کہ وہ یا تو اس امکان کو حقیقت کا روپ دینے میں اس کی مدد کرے یا اسے یونہی ضائع ہونے دے۔ ایک بیوی کی صلاحیت کو حقیقت کا روپ دینے کا عمل اس وقت شروع ہوتا ہے جب اس کا شوہر اپنی بیوی کو خدا کی طرف سے بھیجا گیا ایک تحفہ مانتا ہے۔ جب ایک مرد اپنی بیوی کو خدا کا ایک براہ راست تحفہ تسلیم کر لے گا تو وہ فطری طور پر اس کے بارے میں سنجیدہ ہو جائے گا اور اور اسے اس بات کا یقین ہو جائے گا کہ خدا کا انتخاب غلط نہیں ہو سکتا۔ جیسے دوسرے معاملات میں خدا کا فیصلہ ہمیشہ صحیح ہوتا ہے ویسے ہی اس کا یہ بھی فیصلہ درست ہے۔ جب ایک مرد اس طرح سوچنے لگتا ہے تو اسی وقت ایک بیوی کی صلاحیت کو حقیقت کا روپ دینے کا عمل شروع ہو جاتا ہے۔

 

Maulana Wahiduddin Khan on Anti-Muslim Sentiments  اسلام مخالف جذبات پر مولانا وحید الدین خان کے تاثرات
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

اگر حقائق کا تجزیہ کیا جائے تو ہمیں یہ معلوم ہوگا کہ جو مثالیں ابھی آپ نے پیش کی ہیں وہ امتیازی سلوک کے زمرے میں نہیں آتی ہیں۔ بلکہ یہ حالات خود مسلمانوں کے مشکوک رویوں کا نتیجہ ہیں۔ اس امتیازی سلوک کے ذمہ دار خود مسلمان ہی ہیں۔ایک حدیث کے مطابق بنی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ: "خود کو مشکوک ہونے سے بچاؤ"۔ چونکہ مسلمان غلط سرگرمیوں میں ملوث مسلمانوں کی کھل کر تردید نہیں کرتے ہیں اسی لیے اس کمیونٹی کے دوسرے افراد کو بھی اس "امتیازی سلوک" کا سامنا کرنا ہوگا۔ اگر مسلمان غلط سرگرمیوں میں ملوث مسلمانوں کی کھل کر تردید کرتے تو اس "امتیازی سلوک" کا سامناصرف انہیں مسلمانوں کو کرنا پڑتا جو ان غلط سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔

 

میں نہ تو کوئی شیعہ ہوں اور نہ ہی کوئی سنی ہوں بلکہ ایک مسلمان ہونے کے علاوہ میں اللہ تعالی کی سب سے بہترین مخلوق اور ایک انسان ہوں۔ میں بنیادی طور پر اللہ کی سب سے بہترین مخلوق ہوں کیونکہ سب سے بہترین مخلوق میں بھی اللہ کی سب سے اعلیٰ اور سب سے بہترین مخلوق (محمد صلی اللہ علیہ وسلم) کے نواسے اور سب سے نفیس مرد اور دنیا کی سب سے زیادہ متقی اور پاکیزہ خاتون کے بیٹے (حضرت امام حسین رضی اللہ تعالیٰ عنہ) میرے دل میں بستے ہیں۔ وہ مایوسی میں میری امیدوں کا چشمہ ہیں، وہ آزمائش اور فتنوں میں میری دعا اور میری طاقت ہیں۔ وہ ایک نظریہ ہیں؛ وہ سچائی اور انصاف کا مجسمہ ہیں۔ وہ دنیا کے ہر ظلم و ستم کا جواب ہیں ۔ وہ نہ صرف شیعوں کے ہیں نہ اہل سنت کے ہیں اور نہ ہی مسلمانوں کے ہیں۔ انسانیت کو بیدار ہونے دیں دنیا کا ہر قبیلہ پکارے گا ہمارے ہیں حسین۔ حسین پوری انسانیت کے لئے ہیں۔

 

The Quran and the Golden Rule  قرآن اور سنہرا اصول
Naseer Ahmed, New Age Islam

وحشی طور پر ہم نے دیگر کمیونٹیز سے الگ تھلگ ہو کر ایک چھوٹی کمیونٹی کے طور پر زندگی گزاری ہے، ہمارے درمیان باہمی اعتماد کا زبردست فقدان تھا، جس کی وجہ سے اکثر شب خون اور اچانک ایک دوسرے پر حملے ہوتے رہتے تھے جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ موت کی شرح بہت زیادہ بڑھ گئی تھی۔ یہ دیکھنا بہت آسان ہے کہ کس طرح اس سنہرے اصول نے ایسے لوگوں کو تبدیل کر دیا۔ ایک مرتبہ جب اس اصول کو ایک مشترک مذہب کے لوگوں نے قبول کر لیا اور اس پر جب وہ عمل پیرا ہو گئے تو ان کے درمیان تعاون اور باہمی اعتماد کی روایت شروع ہو گئی جس کے نتیجے میں شرح اموات کم ہو گئی۔ ایک بڑی جماعت میں امن مشترکہ اقدار سے پیدا ہوتا ہے جیسا کہ یہی مسئلہ ان لوگوں کا ہے جو ایک ہی مذہب کے ماننے والے ہیں۔ آج بھی لوگ اپنے ہم مذہبوں پر یقین کرتے ہیں اور دوسرے مذاہب سے تعلق رکھنے والوں پر اعتماد نہیں کرتے۔ اسی لیے مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والوں کے درمیان ایک مشترکہ قدر دریافت کرنے کے لیے بین المذاہب مکالموں کا انعقاد ضروری ہے۔

 

ابن عباس رضی اللہ عنہ سے مروی ایک حدیث کے مطابق نبی صلی اللہ علیہ نے عاشورہ کے دن روزہ رکھا اور اس دن روزہ رکھنے کا حکم دیا، اور جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے اس دن کے روزے کی فضیلت کے بارے میں پوچھا گیا توآپ نے فرمایا:"میں اس بات کی بشارت دیتا ہوں کہ اللہ اس دن روزہ رکھنے والوں کے گزشتہ ایک سال کے اور آئندہ ایک سال کے گناہوں کو مٹا دے گا۔"ابن عباس کی ایک اور روایت کے مطابق پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے عاشورہ کے دن روزہ رکھا اور لوگوں کو اس دن روزہ رکھنے کا حکم دیا۔ لوگوں نے کہا:"اے اللہ کے رسول اس دن کا احترام تو یہودی اور عیسائی کرتے ہیں۔ یہ سن کر نبی صلی اللہ علیہ وسلم فرمایا: "انشاء اللہ، اگر میں آئندہ سال تک زندہ رہا تو ہم نویں محرم کو روزہ رکھیں گے، اور آئندہ سال محرم سے پہلے ہی نبی صلی اللہ علیہ وسلم انتقال فرما گئے۔نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے حکم دیا تھا کہ مسلمانوں کو 10محرم اور اس سے ایک دن پہلے 9محرم کو یا اس کے ایک دن کے بعد 11محرم کو روزہ رکھ کر یہودیوں سے مشابہت ختم کرنا چاہئے۔

 

Enjoining Good and Forbidding Wrong  امر بالمعروف اور نہی عن المنکر کا فریضہ
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

آج دنیا کے مختلف علاقوں میں جہاد کے نام پر تشدد اپنے پاؤں پسار رہا ہے۔ یہ نام نہاد 'مقدس تشدد' خود ساختہ مسلم رہنماؤں کی قیادت میں انجام دیا جا رہا ہے۔ اور اس میں تقریبا تمام مسلمان کسی نہ کسی طرح ملوث ہیں اس لیے کہ جو مسلمان براہ راست اس تشدد میں ملوث نہیں ہیں وہ اس پر خاموش ہیں۔ اسلامی نقطہ نظر سے ان کی یہ خاموشی بالواسطہ طور پر ان کے تشدد میں ملوث ہونے کے مترادف ہے۔ لہذا، اسلامی اصولوں کے مطابق پوری امت مسلمہ کو اس تشدد میں ملوث تصور کیا جائے گا-کچھ لوگ براہ راست ہوں گے جبکہ کچھ بالواسطہ طور پر۔

 

Morality of Good Conduct, and Social Services  بَہارِ ادب: آدابِ خدمت
Misbahul Huda, New Age Islam

یہ امر کسی سے مخفی نہیں ہے کہ مذہب، ذات، رنگ اور نسل سے قطع نظر خالصتاً لوجہ اللہ خدمت خلق جہاں ایک مہذب معاشرے کی علامت ہے وہیں یہ ایک بہت بڑی عبادت بھی ہے، اور بات اگر اسلامی نقطہ نظر (Islamic prospective) سے کی جائے تو خدمت خلق خود میں ایک اللہ کی انتہائی محبوب اور پسندیدہ عبادت ہے، یہاں تک کہ زکوٰۃ کا نظام جو کہ دین اسلام کے پانچ ستونوں میں سے ایک ہے اسی خدمت خلق کے تصور پر مبنی ہے اور اسلامی تعلیمات میں خدمت خلق پر اللہ کی بارگاہ میں عظیم الشان اور بے مثال انعامات کی بھی جا بجا بشارتیں وارد ہوئی ہیں۔ اس ضمن میں حضرت عبد اللہ بن مبارک رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ آداب خدمت یعنی خدمت کے آداب، اس کے لوازمات اور اس کے تقاضوں سے واقف ہونا اور ان کی رعایت کرنا کسی کی خدمت کرنے سے بھی زیادہ اہم اور ضروری ہے۔

 

Beyond the Moderate and Radical in Indian Islam  ہندوستانی تناظر میں اعتدال پسند اور بنیاد پرست اسلام سے بھی اہم مسائل
Arshad Alam, New Age Islam

 فرق صرف ان کی تشریحات میں ہے۔ کبھی کبھی ان دونوں کی تشریحات میں بہت بڑا فرق پایا جاتا ہے۔ لیکن اسلامی شریعت کے بیشتر معاملات میں اور خاص طور پر عورتوں سے متعلق شرعی قوانین کے معاملات میں شاید ہی ان دونوں کے درمیان کوئی فرق پایا جاتا ہو۔ اس کے علاوہ، ہمیں یہ بھی یاد رکھنا چاہیے کہ لکھے ہوئے الفاظ خود ایک مخصوص روایت کو فروغ دیتے ہیں اور چند روایتی معمولات کا سوالات کی زد میں آنا فطری ہے۔ لہٰذا، اس میں تعجب کی کوئی بات نہیں ہونی چاہیے کہ بریلویوں کی بھی کتابوں میں کچھ ہندوستانی اور اسلامی معمولات اور طرز عمل پر زبردست تنقید کی گئی ہے۔ لہذا، ہندوستانی اسلام کی نوعیت کے بارے میں کسی بھی مدلل بحث میں، بریلوی اور دیوبندی کے درمیان اس باطل تفریق کو ترک کر دیا جانا چاہیے۔

 

The Purpose of Life from an Islamic Perspective  اسلامی نقطہ نظر سے زندگی کا مقصد
Sheima Sumer

 خدا کی رضا کا حصول ہر مخلص مومن کا مقصد حیات ہے: "اور لوگوں میں کوئی شخص ایسا بھی ہوتا ہے جو اﷲ کی رضا حاصل کرنے کے لئے اپنی جان بھی بیچ ڈالتا ہے، اور اﷲ بندوں پر بڑی مہربانی فرمانے والا ہے۔" (2:207)خدا پر ایمان اور اچھے اعمال کرنا ہماری روح کو فائدہ پہونچاتا ہے۔ قرآن ہمیں بتاتا ہے کہ فلاح پانے والے وہی لوگ ہیں جنہوں نے اپنی روح کو پاک اور ستھرا کر لیا ہے:"اور انسانی جان کاور بیشک وہ شخص نامراد ہوگیا جس نے اسے (گناہوں میں) ملوث کر لیا (اور نیکی کو دبا دیا۔ی قَسم اور اسے ہمہ پہلو توازن و درستگی دینے والے کی قَسم، پھر اس نے اسے اس کی بدکاری اور پرہیزگاری (کی تمیز) سمجھا دی، بیشک وہ شخص فلاح پا گیا جس نے اس (نفس) کو (رذائل سے) پاک کر لیا۔"(قرآن کریم 10-91:7)

 

Maulana Wahiduddin Khan on Islam, Dawah and Interfaith Relations  اسلام، دعوت اور بین المذاہب تعلقات پر مولانا وحد الدین خان کا اظہار رائے
Maulana Wahiduddin Khan for New Age Islam

 پیدائشی طور پر میں ایک مسلمان ہوں۔ اور قرآن مجید کے مطالعہ سے میں نے یہ سیکھا ہے کہ زندگی کے بارے میں اسلام کا تصور یہ ہے کہ ایک انسان کو ذہنی طور پر اس حد تک قابل ہونا چاہیے کہ وہ منفی صورت حال کو مثبت صورت حال سے تبدیل کر سکے۔ میں نے اسلام کے مطالعہ سے یہ اصول سیکھا تھا۔ بعد میں ایک مشہور ہندوستانی راہب سوامی ویویکانند کے ایک واقعہ سے میں اۤگاہ ہوا۔ ایک مرتبہ ان کے ایک عیسائی دوست نے انہیں دعوت دی اور انہیں ایک کمرے میں لے گیا۔ وہاں ایک میز پرایک کے اوپر ایک کتابوں کا ڈھیر پڑا ہوا تھا۔ یہ دنیا کے بڑے مذاہب کی مقدس کتابیں تھیں۔ وہ تمام کتابیں اس ترتیب میں رکھی ہوئی تھیں کہ گیتا سب سے نچلے حصے میں تھا اور اس کے ٹھیک اوپر بائبل رکھا ہوا تھا۔ میزبان نے سوچا کہ سوامی وویکا نند یہ دیکھ کر بھڑک اٹھیں گے۔ میزبان نے کتابوں کی طرف اشارہ کیا اور پوچھا: "سوامی جی، کتابوں کی اس ترتیب پر آپ کا کیا کہنا ہے؟" سوامی جی آہستہ سے مسکرائے اور کہا:"بنیاد بہت اچھی ہے۔"

 

Beauty Of Ethics and Respect  (بَہارِ ادب: حسن ادب اور حسن خلق (قسط:1
Misbahul Huda, New Age Islam

ان کے لیے یہ ایک لمحہ فکریہ ہے کہ اگر ان کے اخلاق ہی بہتر نہ ہوئے تو کیا ان کے علم نے انہیں کوئی نفع پہونچایا؟ اور جس علم کو انہوں نے ادب سے مجرد رکھا کیا وہ علم اس دنیا و آخرت میں ان کے لیے کسی بھی خیر کا ضامن ہو سکتا ہے؟ ایسے علم کا انہیں کیا فائدہ جب ان کے اندر اتنا بھی شعور پیدا نہ ہو سکا کہ اپنے علمی اور فکری حریف کا نام کس طرح لینا چاہیے، ان کے ساتھ ان کے معاملات کیسے ہونے چاہیےاور اختلاف کی صورت میں اپنے علمی اور فکری حریف کے ساتھ ان کا رویہ کیسا ہونا چاہیے؟ خلاصہ یہ کہ جو ان امور اور ان اداب سے نا واقف ہے وہ دراصل اسلام کی روح سے نا واقف ہے۔ اسی لیے صوفیاء کرام اور بزرگان دین نے فرمایا ہے کہ دین ادب کا نام ہے اور بے ادبی بے دینی ہے۔اولیاء کاملین اور سلف صالحین سے منقول ہےکہ زیادہ علم اور تھوڑا ادب فائدہ مند نہیں بلکہ مضر ہے، علم اور ادب کے درمیان تناسب کا معیار یہ ہونا چاہیے کہ ادب آٹے جتنا ہو اور اس میں علم نمک کے برابر ہو۔ اگر علم اور ادب کے درمیان یہ تناسب ہے تو پھر علم فائدہ مند ہے۔ ورنہ جس طرح کم آٹے میں زیادہ نمک ذائقے میں فساد پیدا کر دیاتا ہے اسی طرح اگر علم زیادہ ہو اور ادب کم تو پھر وہ علم معاشرے میں فسادات اور اختلافات و انتشار کا سبب بنتا ہے۔

 

The Stars Appear Different From What They Actually Are  (ہیں کوا کب کچھ ...... (10

ہمارے ہاں اللہ کے ذکر سے مراد ہوتاہے زبان سے اللہ اللہ کہتے رہنا اور اسے تسبیح کے دانوں پر گنتے جانا، یا خانقاہوں میں ‘‘ہو حق’’ کی ضر بیں قلب پر لگانا ، یہ ذکر اللہ کا قرآنی مفہوم نہیں ہے ۔ قرآن کریم کی روسے ذکر اللہ سے مراد یہ ہے کہ انسان زندگی کے ہر شعبے میں سفر حیات کے ہر موڑ پر اللہ کو یاد رکھے اس کے قانون کو سامنے رکھ کر قدم اٹھائے۔ اللہ کے قوانین کو کبھی بھی نگاہوں سےاوجھل نہ ہونے دے ۔ اسے کہتے ہیں ‘‘ اللہ کی یاد’’ اللہ کا حکم ہے ۔ وَأَقِيمُوا الْوَزْنَ بِالْقِسْطِ وَلَا تُخْسِرُوا الْمِيزَانَ (9۔55) اور انصاف سے تو لو وزن میں کمی مت کرو۔

 

The Problem with the Islamic Apocalypse  اسلامی صحیفوں کا غلط استعمال
Mustafa Akyol

مسلمانوں کو اس بات پر بھی غور کرنا چاہئے کہ آخری دور کے بارے میں ان پیشین گوئیوں کو تشبیہاً پڑھنا زیادہ بہتر ہو سکتا ہے ۔ اس سے ہمیں اپنے ذہنوں کے دریچوں کو بند کرنے کے بجائے کھولنے میں مدد مل سکتی ہے۔ مثال کے طور پر 19ویں صدی کے اسلامی ا سکالر محمد عبدہ کا کہنا ہے کہ یسوع کی آمد ثانی اسلام کے اندر اصلاحات کے لئے ایک استعارہ ہے۔ ان کا ماننا ہے کہ یسوع مسیح کے دور کے قدامت پسند یہودیوں کی طرح آج کے قدامت پسند مسلمان لفظی طور پر اسلامی قانون پر سختی کے ساتھ عمل پیرا ہیں لیکن وہ اس کی روح اور اخلاقی تعلیمات سے غافل ہیں۔ عبدہ کا کہنا ہے کہ مسلمانوں کو ایک "مسیح پر مبنی تجدید" کی ضرورت ہے جس میں "رحمت، محبت اور امن" پر زور دیا گیا ہو۔ تجدید کا یہ نظریہ "صلیب توڑنے،" ​​پر نہیں بلکہ " کریسسنٹ کی مرمت کرنے" پر مرکوز ہے۔

 


Get New Age Islam in Your Inbox
E-mail:
Most Popular Articles
Videos

The Reality of Pakistani Propaganda of Ghazwa e Hind and Composite Culture of IndiaPLAY 

Global Terrorism and Islam; M J Akbar provides The Indian PerspectivePLAY 

Shaukat Kashmiri speaks to New Age Islam TV on impact of Sufi IslamPLAY 

Petrodollar Islam, Salafi Islam, Wahhabi Islam in Pakistani SocietyPLAY 

Dr. Muhammad Hanif Khan Shastri Speaks on Unity of God in Islam and HinduismPLAY 

Indian Muslims Oppose Wahhabi Extremism: A NewAgeIslam TV Report- 8PLAY 

NewAgeIslam, Editor Sultan Shahin speaks on the Taliban and radical IslamPLAY 

Reality of Islamic Terrorism or Extremism by Dr. Tahirul QadriPLAY 

Sultan Shahin, Editor, NewAgeIslam speaks at UNHRC: Islam and Religious MinoritiesPLAY 

NEW COMMENTS

  • I proudly because I m indian muslim I sea jio or jine do thanks '
    ( By Shahid Ahmad )
  • Dear hats off! Why not read the article and post a comment on it, rather than turning the debate to another direction. What Islam....
    ( By muhammd yunus )
  • Is Javed Ghamidi also delusional? Or Is Ghulam Mohiyuudin sb a determined obstructer of the truth? According to Javed Ghamidi, the following ....
    ( By Naseer Ahmed )
  • what was allowed for the prophet was not allowed to others. no one was allowed to marry the widows of the prophet.....
    ( By hats off! )
  • First you need to do something about your own hate speech.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Yunus sahib, I do not know whether explanations of the fighting verses have the effect of Islam being seen as a less violent religion or ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • The article is based on the principle of exceptionalism - what was allowed to the Prophet and why but is not allowed to his followers ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Dear Ghulam Mohiyuddin Sahab, Agreed! In fact the Qur'an asks the Muslims to seek the best meaning in it and to focus ....
    ( By muhammd yunus )
  • i am going to learn how to get the good meaning out of hate speech and...
    ( By hats off! )
  • Excellent article
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Good article! However if the time and effort that our ulema have spent over the past century...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • There is a good way to read the book and there is a Saudi/Hats-Off way to derive the worst meaning out of it. Giving vent ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Hats Off's hatefulness has blinded him to the fact that the Muslim community is not one homogenous mass. Moderate Muslims have their moderate opinions ....
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Muslims are not as pre-occupied with kufr as Naseer sb. thinks. Muslims hate Shias, Sunnis and Ahmadis a lot more than...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Very good lecture.
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • the saudi barbarians are merely asserting what their holy book tells...
    ( By hats off! )
  • The fight against sexual abuse necessarily entails more respect for women as equals with the same rights...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • the pretended surprise of "moderate" muslims is the grass in which the snakes of extremism hide and bite the kuffar.'
    ( By hats off! )
  • As a society, we need to critically reflect on our practices that deny basic human rights to some individuals. Likewise...
    ( By Meera )
  • Rightly said, women’s right to assert themselves in matters of marriage should not be denied. These....
    ( By Meera )
  • Why is this so-called Capt. Safdar’s bigotry surprising? Replace Ahmadi with Hindu, Safdar with Jinnah and the rest of the speech ...
    ( By South Asian )
  • Jai Shree Ram'
    ( By Rajkumar )
  • GM Sb says: “His claim that he is dealing a deadly blow to the extremist ideology is not only grossly exaggerated but is delusional” The definition ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • Let us introduce common civil code in India, we can forget all such nonsenses.Let all married couples have two children in all let us ...
    ( By dr.A.Anburaj )
  • Sorry sisters, men do not like to self police so they do all short ps of thing with women on matter of clothing. Last peace ....
    ( By Aayina )
  • The simple answer, he was. He wanted Muslim to educate to dominate Hindus, if two nations theory cannot came into realisation.
    ( By Aayina )
  • Easy way to is that called themselves as new Qadyian relgion and Gulam Mirza Ahmed as their prophet. Just start to lie like Mulism do that ...
    ( By Aayina )
  • Its may be true that Muslim may not need to sexually assault. I have witnessed lots of my Muslim friends that Muslim girls are reach to ...
    ( By Aayina )
  • Convertion might be not limited to bride but for kids certainly Muslim kid. Hypocrates have no answer ....
    ( By Aayina )
  • a shameless member os the most persecuted sect in islam revels in his stockholm syndrome and crows about it. he never...
    ( By hats off! )
  • As is typical of him, Naseer sb again resorts to abuse and insults. The fact remains that he has been trying to make a huge point ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Giving the spouse-to-be freedom of choice in matters of faith would be the right way to prove one's love and respect. There should be no ...
    ( By Ghulam Mohiyuddin )
  • Well Done, keep it up...'
    ( By vgf )
  • the rag that goes by the name of "the independent" is now owned by a saudi arabian. one saudi ....
    ( By hats off! )
  • All religions teach hatred and violence. Religious scrptures are full of bigotry. We should not be apologetic and there is no need to lie or, ...
    ( By Ashok Sharma )
  • What Wahiduddin Khan, Javed Ghamidi and Muhammad Yunus have been saying is what Yunus sb said in his article “Hindus are Not the Mushrikin Mentioned ...
    ( By Naseer Ahmed )
  • dictionaries are inherently islamophobic. and arabic does not have a word...
    ( By hats off! )
  • @Manzar Khan By the way, I am not suggesting any changes in Islam. Only a new Islamic ...
    ( By Sultan Shahin )
  • @Manzar Khan Who authorised theologians to create their theology. In Islam, there is nothing between a Muslim and his...
    ( By Sultan Shahin )
  • Who authorized u Mr Shahin to suggest changes in Islam?'
    ( By Manzar Khan )